PTI government, Minar-e-Pakistan, jalsa, Maryam Nawaz, PML-N, party meeting
14 دسمبر 2020 (15:00) 2020-12-14

لاہور: پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز شریف نے کہا کہ مینار پاکستان کا جلسہ خالصتاً عوام کا جلسہ تھا اور انہوں نے فیصلہ دیدیا، مینار پاکستان کے جلسے سے یہ گھبرا گئے ہیں، انہیں اب گھبرانا ہی چاہئے۔

تفصیلات کے مطابق پارٹی کی عاملہ اور ورکنگ کمیٹیوں، قومی اسمبلی اور سینٹ کے ارکان کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ مینار پاکستان کے تاریخی جلسے کے انعقاد پر عوام کا شکریہ ادا کرتے ہیں، انہوں نے کہا کہ جلسے کے دوران پتہ چل گیا تھا میڈیا کو ہدایات کہاں سے آرہی ہیں، ہمیں اب ایسی باتوں سے فرق نہیں پڑتا، جلسہ کے انعقاد میں کئی مشکلات کا سامنا رہا۔

ن لیگ کی نائب صدر نے کہا کہ جلسہ دیکھنے والے جانتے ہیں کہ جتنا بڑا جلسہ میدان میں تھا، اس سے زیادہ بڑا جلسہ باہر تھا۔ خواتین کے جلسہ میں شرکت کرنے پر ان کا خصوصی طور پر شکریہ ادا کرتی ہوں، میڈیا کی خبر ہے خواتین بڑی تعداد میں جلسے میں شریک ہوئیں۔

انہوں نے کہا کہ ن لیگ اسلام آباد لانگ مارچ میں پی ڈی ایم کے سربراہ کے ساتھ مکمل تعاون کرے گی اور پارٹی رہنماوں کے استعفے میں پیش کرے گی۔

دوسری جانب حکومتی کھلاڑیوں کے اپوزیشن پر وار جاری ہیں، حکومتی رہنماؤں نے لاہور جلسے کو فلاپ قرار دیدیا، وزیراطلاعات شبلی فراز کا کہنا تھا کہ اپوزیشن والے نہ آر ہوئے نہ پار بس خوار ہوئے۔

انہوں نے کہا کہ گوجرانوالہ جلسے میں پاک افواج کے خلاف زہر اگلا گیا، کراچی جلسے میں مزارِ قائد کی بے حرمتی کی گئی، کوئٹہ جلسے میں پاکستان توڑنے کا پیغام دیا گیا۔

معاون خصوصی شہباز گِل نے کہا کہ جلسے میں لاہوریوں کو غدار کہا گیا، گیارہ جماعتیں مل کر بھی جلسہ کامیاب نہ بناسکیں۔

مشیر احتساب و داخلہ شہزاد اکبر نے مشورہ دیا کہ ن لیگ کے تمام پارلیمانی اراکین کو چاہیے کہ وہ استعفے لندن والے قائد میاں صاحب کو بھجوائیں اور میاں صاحب جنوری میں خود آ کر استعفے سپیکر کو پیش کریں۔


ای پیپر