Maryam Nawaz, Lahore jalsa, Rana Sanaullah, Islamabad, long march, PML-N, PDM
14 دسمبر 2020 (14:20) 2020-12-14

لاہور: پاکستان مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر رانا ثناء اللہ نے کہا کہ مریم نواز کا آر یا پار سے مراد لاہور جلسہ ہی تھا۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رکن قومی اسمبلی رانا ثناءاللہ نے کہا کہ گزشتہ روز لاہور کے شہریوں نے جلسے میں بھر پور شرکت کی ، حکومت نے پی ڈی ایم کے جلسے میں رکاوٹیں کھڑی کیں، حکومت نے جلسے کے لیے ٹرانسپورٹ کو چلنے نہیں دیا۔انہوں نے کہا کہ  تنظیم سازی کا عمل مستقل ہے جو ہر وقت جاری رہتا ہے۔

انہوں نے واضح کیا کہ حکومت زور لگا رہی تھی کہ جلسہ نہ ہو سکے، لیکن پھر بھی رکاوٹوں کے باوجود لوگوں نے جلسے میں بھر پور شرکت کی ، رکن قومی اسمبلی نے کہا کہ جتنی تعداد ہنڈال میں موجود تھی اس سے زیادہ باہر بیٹھے تھے۔

رانا ثناء اللہ نے کہا کہ آج ن لیگ کی سینٹرل ورکنگ کمیٹی کا اجلاس ہونے جا رہا ہے۔ اجلاس میں پی ڈی ایم کے فیصلوں کی توثیق کی جائے گی۔ تنظیم سازی کا عمل مستقل ہے جو ہر وقت جاری رہتا ہے۔انہوں نے کہا کہ پارٹی کے پاس استعفوں اور لانگ مارچ کا آپشن موجود ہے۔ مسلم لیگ ن دونوں آپشنز کے لیے تیار ہے۔ فیصلہ جب بھی ہو مسلم لیگ ن عمل کے لیے تیار ہے۔رانا ثناء اللہ نے قوم سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ سب اس نااہل حکومت کو دھکا دینے کے لیے اسلام آباد جائیں۔

واضح رہے کہ کل کے جلسے میں بلاول بھٹو زرداری اور سربراہ پی ڈی ایم مولانا فضل الرحمان نے اپنے خطاب کے دوران اسلام آباد لونگ مارچ کا اعلان کیا تھا۔ دونوں رہنماوں کا کہنا تھا کہ مذاکرات کا وقت چلا گیا اب حکومت کو گھر جانا ہو گا۔

فضل الرحمان نے مزید کہا کہ تمام رہنما لانگ مارچ میں اسلام آباد پہنچ کر اپنے استعفے بھی پیش کریں گے جس کے بعد عمران خان کو گھر جانا ہو گا۔


ای پیپر