Decision to start implementation of SOPs across the country from 1st Ramadan
کیپشن:   فائل فوٹو
14 اپریل 2021 (07:35) 2021-04-14

اسلام آباد: نیشنل کمانڈ آپریشن سینٹر نے ملک بھر میں کورونا کے بڑھتے کیسز کو دیکھتے ہوئے ایس او پیز پر یکم رمضان سے ہی سخت عملدرآمد شروع کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔

اسلام آباد میں وفاقی وزیر اسد عمر کے زیر صدارت ہونے والے این سی او سی اجلاس کے اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ ملک بھر میں ہفتہ اور اتوار کاروبار بند رہے گا۔ وفاق کی اکائیاں اضلاع اور شہروں میں بیماری کا پھیلاؤ دیکھ کر اقدامات لے سکتی ہیں۔

اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ بین الصوبائی ٹرانسپورٹ پر ہفتے میں دو دن یعنی ہفتہ اور اتوار کو پابندی برقرار رہے گی۔ یہ پابندی 25 اور 26 اپریل کی درمیانی شب تک ہوگی تاہم وفاق کی اکائیاں چاہیں تو ایس او پیز کے حوالے سے سخت اقدامات کر سکتی ہیں۔

اس کے علاوہ کھیلوں اور ثقافتی میلوں سمیت دیگر تقریبات پر مکمل پابندی ہوگی۔ شہریوں کو ہوٹلز اور ریسٹورینٹس سے ٹیک اوے کی اجازت ہوگی۔ افطار سے رات 11 بج کر 59 منٹ تک باہر کھانے کی اجازت ہوگی۔ اس پر عملدرآمد انتظامیہ کی ذمہ داری ہوگی۔ سینما گھر اور مزارات مکمل طور پر بند رہیں گے۔ لاک ڈاؤن کورونا کے خطرے کو مدنظر رکھ کر لگایا جائے گا۔

خیال رہے کہ پاکستان میں کورونا سے یومیہ اموات کی تعداد میں اضافہ ہو گیا ہے۔ ملک بھر میں 24 گھنٹے کے دوران کورونا سے مزید 135 افراد جان کی بازی ہار گئے جس کے بعد اموات کی تعداد 15 ہزار 754 ہو گئی۔

گزشتہ روز کورونا کے 48 ہزار 92 ٹیسٹ کیے گئے جن میں سے 4 ہزار 681 افراد میں کورونا کی تشخیص ہوئی جبکہ 24 گھنٹے کے دوران مثبت کیسز کی شرح 9.73 فیصد رہی۔

این سی او سی کے تازہ ترین اعدادوشمار کے مطابق پاکستان میں کورونا کیسز کی مجموعی تعداد 7 لاکھ 34 ہزار 601 ہو گئی ہے۔

ادھر دنیا بھر میں کورونا سے مزید 12 ہزار 637 افراد کی ہلاکت کے بعد اس وبا سے مرنے والوں کی تعداد 29 لاکھ 71 ہزار 27 ہو گئی ہے۔ جبکہ مزید 7 لاکھ 24 ہزار 552 کیسز رپورٹ ہونے سے اس مرض میں عالمی سطح پر مبتلا افراد کی تعداد 13 کروڑ 79 لاکھ 95 ہزار 880 ہو گئی ہے۔


ای پیپر