Justice Waqar Seth shares in the grief of his family: Maulana Fazlur Rehman
13 نومبر 2020 (14:19) 2020-11-13

پشاور:پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ جسٹس وقار سیٹھ کے اہلخانہ کے غم میں برابر کے شریک ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پشاور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس وقار سیٹھ کے کورونا وائرس کے باعث انتقال پر پاکستان ڈیمو کریکٹ موومنٹ (پی ڈی ایم)اور جمعیت علمائے اسلام(ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا کہ مرحوم کی آئین کی بالادستی اور ملک و ملت کے کیلئے انکی خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ وقار سیٹھ کے فیصلوں سے ہمیشہ عدلیہ کی عزت اور وقار میں اضافہ ہوتا رہا ہے۔

یاد رہے کہ چیف جسٹس  پشاور ہائیکورٹ  جسٹس وقار احمد سیٹھ  گزشتہ روز انتقال کرگئے تھے، جسٹس وقار احمد اسلام آباد  کے  نجی  ہسپتال میں زیر علاج تھے۔

خاندان ذرائع کے مطابق چیف جسٹس کی طبیعت کچھ دنوں سے خراب تھی ،ذرائع کے مطابق چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ عالمی وبا کا شکار ہو کر ہسپتال میں زیر علاج تھے ۔

نجی ٹی وی چینل ذرائع کے مطابق جسٹس وقار احمد سیٹھ کرونا وائرس کا شکار ہو چکے تھے اس وبا کے باعث ہی انتقال ہوا ،چیف جسٹس اسلام آباد کے ہسپتال میں زیر علاج تھے ،واضح رہے چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ جسٹس وقار احمد سیٹھ نے سپریم کورٹ میں تعیناتی کی درخواست دی تھی ۔

جسٹس وقار احمد سیٹھ کا تعلق خیبر پختونخوا کے جنوبی ضلع ڈیرہ اسماعیل خان سے تھا، انہوں نے 1977ءمیں کینٹ پبلک سکول پشاور سے میٹرک جبکہ ہائر سیکنڈری تعلیم ایف جی انٹر کالج فار بوائز سے حاصل کی ابتدائی تعلیم مکمل کرنے کے بعد اسلامیہ کالج پشاور سے 1981 ءمیں بیچلر کی ڈگری حاصل کی تھی۔

سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کیس کا تفصیلی فیصلہ لکھنے کی وجہ سے بھی  انہیں کافی  شہرت ملی ۔انہوں نے مشرف کو پھانسی دینے کا مختصر فیصلہ 17 دسمبر 2019ءکو سنایا تھا۔ان کے اہم ترین فیصلوں میں نمایاں فیصلہ 2018 ءکا فوجی عدالتوں سے سزائے موت پانے والے 74 مبینہ دہشت گردوں کی سزائیں معطل کرنے کا فیصلہ ہے۔


ای پیپر