جج ارشد ملک کی مبینہ ویڈیو سکینڈل کا سرغنہ سامنے آگیا
13 جولائی 2019 (20:01) 2019-07-13

لاہور : جج ارشد ملک کی مبینہ ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد ملکی سیاست اور اداروں میں ہلچل مچ گئی ، جج ارشد ملک کے بیان حلفی کے بعد انہیں کام سے بھی روک دیا گیا ،اب یہ انکشاف سامنے آیا ہے کہ جج ارشد ملک کی ویڈیو کیسے اور کو ن بناتا رہا ۔

تفصیلات کے مطابق ملتان سے تعلق رکھنے والی کاروباری شخصیت میاں طارق کے جج ارشد ملک سے چند وجوہات کی بنا پر گہرے مراسم تھے ، انہی تعلقات کا فائدہ اُٹھاتے ہوئے میاں طارق نے جج ارشد ملک کی کچھ غیر اخلاقی ویڈیوز بنائیں ۔

نجی ٹی وی کے ذرائع کے مطابق میاں طارق کے بھائی کو اس سے قبل منشیات کیس میں جج ارشد ملک نے سزائے موت سنائی تھی جس کو بچانے کیلئے میاںطارق نے مختلف حربے استعمال کیے اور میاں طارق کیساتھ دوستی قائم کرکے بعد ازاں مختلف طریقے سے اسے بلیک میل کرنا شروع کر دیا اور اپنے بھائی کی سزائے موت کے کیس میں بھی ضمانت کروا لی ۔

نجی ٹی وی ذرائع کے مطابق میاں طارق بعد میں جج ارشد ملک کیساتھ مراسم قائم کرکے مزید کاروائیاں جاری رکھتا رہا ،میاں طارق دیکھتے ہی دیکھتے کروڑوں پتی بن گیا ،رپورٹ کے مطابق میاں طارق نے اسلام آباد ایف 10میں ایک کوٹھی کرائے پر لے رکھی تھی جہاں وہ بڑی بڑی محفلیں سجایا کرتا تھا اور مختلف لوگوں کو اپنے جال میں پھنسا کر ان کی ویڈیوز بنا کر بعد میں بلیک میل کرتا تھا ۔

ذرائع کے مطابق جج ارشد ملک سمیت میاں طارق کے پاس بے شمار ویڈیو موجود ہیں ،میاں طارق نے ن لیگ کو ویڈیو منہ مانگے داموں فروخت کی ،میاں طار ق کی ن لیگ سے ڈیل بیرون ملک ہوئی ،ہفتہ 9جون کو ارشد ملک نے میاں طارق اور اسکے بیٹے سے ملاقات کی ۔


ای پیپر