Source : Yahoo

مستونگ،انتخابی مہم کے دوران دھما کہ ، سراج رئیسانی سمیت 15 افراد شہید،30سے زائد زخمی
13 جولائی 2018 (17:04) 2018-07-13

مستونگ:مستونگ کے علاقے درینگڑھ میں انتخابی مہم کے دوران دھماکے میں بلوچستان عوامی پارٹی کے امیدوار سراج رئیسانی سمیت 15 افراد شہید اور 30 زخمی ہوگئے،میڈیا رپورٹس کے مطابق کہیں 20افراد کی ہلاکت کی بھی اطلاعات ہیں ، کوئٹہ کے سرکاری اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے، چھٹی پر موجود ڈاکٹروں اور طبی عملے کو واپس طلب کرلیا گیا، نواب زادہ سراج رئیسانی حلقہ پی بی 35 مستونگ سے بلوچستان عوامی پارٹی کے امیدوار اور سابق وزیراعلی بلوچستان اسلم رئیسانی کے چھوٹے بھائی تھے۔

لیویز ذرائع کے مطابق مستونگ کے علاقے درینگڑھ میں بلوچستان عوامی پارٹی کے امیدوار سراج رئیسانی کی انتخابی مہم کے دوران دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں 15 افراد جاں بحق اور 30 زخمی ہوگئے۔ڈپٹی کمشنر مستونگ نے واقعے میں سراج رئیسانی سمیت 15 افراد کے شہید ہونے کی تصدیق کردی ہے۔ڈپٹی کمشنر مستونگ کے مطابق سراج رئیسانی کو زخمی حالت میں علاج کے لیے کوئٹہ روانہ کیا گیا لیکن وہ جانبر نہ ہوسکے۔

ریسکیو اہلکاروں نے زخمیوں کو طبی امداد کے لیے اسپتال منتقل کردیا ہے جہاں انہیں طبی امداد دی جارہی ہے۔دوسری جانب مستونگ دھماکے کے بعد کوئٹہ کے سرکاری اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے، چھٹی پر موجود ڈاکٹروں اور طبی عملے کو واپس طلب کرلیا گیا ہے۔ترجمان سول اسپتال کوئٹہ کے مطابق مستونگ دھماکے کے 11 زخمیوں کو اسپتال منتقل کیا گیا ہے جہاں ان کا علاج جاری ہے۔

نواب زادہ سراج رئیسانی بلوچستان عوامی پارٹی کے امیدوار تھے اور حلقہ پی بی 35 مستونگ سے الیکشن میں حصہ لے رہے تھے جب کہ وہ سابق وزیراعلی بلوچستان اسلم رئیسانی کے چھوٹے بھائی تھے۔یاد رہے کہ آج خیبرپختونخوا کے علاقے بنوں میں بھی ایم ایم اے کے امیدوار اکرم خان درانی کی انتخابی مہم کو بھی نشانہ بنایا گیا اور جلسے کے بعد ان کے قافلے کے قریب دھماکے میں 4 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوئے۔


ای پیپر