جے یو آئی کے اکرم درانی کے قافلے پر بم حملے میں محفوظ رہے ٗ چار جاں بحق
13 جولائی 2018 (14:25) 2018-07-13


بنوں: جے یو آئی (ف) کے سابق وفاقی وزیر ہاؤسنگ اینڈ ورکس اکرم خان درانی کے قافلے پر بم حملے کے نتیجے میں 4افراد جاں بحق اور 3بچیوں سمیت 35افراد زخمی ہوگئے جن میں 8کی حالت تشویشناک بتائی گئی ہے زخمیوں کو ابتدائی طبی امداد فراہم کرنے کیلئے بنوں ڈی ایچ کیو منتقل کردیا گیا، حملے میں سا بق وزیر محفو ظ رہے ۔


تفصیلات کے مطابق این اے 135بنوں سے عمران خان کے مدمقابل ایم ایم اے کی ٹکٹ پر انتخاب لڑنے والے اکرم خان درانی بنوں نوخیل ہاؤس سے 25کلومیٹر دور نوائی علاقے ہوید میں جلسہ کرکے واپس آ رہے تھے کہ جلسہ گاہ سے 40میٹر دور نصب بم ڈیوائس سے ان کے قافلے پر حملہ کیا گیا جس کے نتیجے میں 4افراد جاں بحق اور3بچوں سمیت 35سے زائد زخمی ہوگئے جنہیں مقامی لوگوں نے ابتدائی طبی امداد فراہم کرنے کیلئے بنوں ڈی ایچ کیو منتقل کردیا جہاں پر ڈاکٹرز نے 8افراد کی حالت کو تشویشناک قرار دے دیا تاہم اکرم خان درانی گاڑی بم پروف ہونے کی وجہ سے محفوظ رہے لیکن ان کے ساتھ سیکیورٹی اسکواڈ کے متعدد اہلکار شدید زخمی ہوئے واقع کے بعد پولیس اور سیکیورٹی فورسز کی بھاری نفری نے علاقے کو گھیر ے میں لے کر سرچ آپریشن بھی کیا ۔


اکرم خان درانی نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اللہ کے فضل وکرم سے خیریت سے ہوں لیکن افسوس ہے کہ ایسے واقعات آخر کیوں کیے جاتے ہیں جن میں بے گناہ لوگوں کو نشانہ بنایا جاتا ہے انہوں نے کہا کہ شہید لوگوں کی مغفرت اور زخمیوں کی صحت یابی کیلئے دعا گو ہوں واضح رہے کہ نیکٹا کی جانب سے 6حساس سیاستدانوں میں اکرم خان درانی کا نام بھی شامل تھا اس لیے انہیں سیکیورٹی بھی فراہم کی گئی تھی کیونکہ اس حملے سے قبل بھی ان پر خود کش حملہ ہوچکا ہے جس میں 10افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوئے تھے


ای پیپر