پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور نے دبئی میں ملک میں نام روشن کر دیا
13 جنوری 2020 (23:17) 2020-01-13

دبئی : پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور نے دبئی میں ایک بھارتی طالبہ کی قیمتی چیزیں انہیں لوٹا کر ایمانداری کی مثال قائم کردی۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ ہفتے دبئی میں راشیل روز نامی بھارتی طالبہ برطانیہ سے چھٹیاں گزارنے اپنے والدین کے پاس آئی ہوئی تھیں، وہ اپنی سالگرہ منانے دوستوں کے ساتھ باہر گئیں جہاں سے واپسی پر ٹیکسی میں اپنا پرس بھول گئیں۔بھارتی طالبہ نے جس ٹیکسی میں سفر کیا تھا اس کا ڈرائیور ایک پاکستانی لڑکا تھا جس کا نام مدثر تھا۔مدثر نے کئی گھنٹوں کی تلاش کے بعد راشیل کا پرس اسے واپس لوٹا دیا جس میں راشیل کا برطانیہ کا ویزا بھی شامل تھا۔

اس واقعے کے حوالے سے بھارتی طالبہ راشیل روزکا کہنا تھا کہ وہ اپنے دوستوں کے ساتھ تھیں اور جلدبازی میں پرس ٹیکسی میں ہی بھول گئیں جس میں ان کا برطانیہ کا ویزا سمیت رہائش کا پرمٹ کارڈ، اسٹوڈنٹ ویزا، متحدہ عرب امارات کا سٹیزن شپ کارڈ، ڈرائیونگ لائسنس سمیت دیگر اہم دستاویزات کے ساتھ ساتھ ایک ہزار درہم شامل تھے۔راشیل کے مطابق اپنے اتنے قیمتی کاغذات ٹیکسی میں بھول آنا بے حد پریشانی کی بات تھی، میرے پاس ان دستاویزات کی کوئی کاپی بھی نہیں تھی جب کہ میرے والدین اس وجہ سے مجھ سے بے حد ناراض بھی تھے۔

ٹیکسی میں انتہائی اہم دستاویزات کھونے کے بعد بھارتی طالبہ نے فوری پولیس کو اطلاع دی تھی کیونکہ اگلے ہی دن انہیں برطانیہ جا کر امتحان بھی دینا تھا۔دوسری جانب اس حوالے سے پاکستانی ڈرائیور مدثر خادم نے کہا کہ لڑکی کو چھوڑنے کے بعد انہوں نے 2 اور رائڈز بھی لی تھیں جس کے بعد انہیں معلوم ہوا کہ کوئی اپنا پرس بھول گیا ہے۔انہوں نے فورا پرس کھول کر معلومات حاصل کرنے کی کوشش کی تاکہ معلوم ہوسکے کہ پرس کس کا ہے۔


ای پیپر