ایران کیساتھ فوجی تصادم،جاپان نے خبردار کر دیا
13 جنوری 2020 (17:01) 2020-01-13

ٹوکیو:جاپانی وزیر اعظم شینزو آبے نے خبردار کیا ہے کہ ایران کے ساتھ فوجی تصادم عالمی امن اور استحکام کو متاثر کرے گا۔

فرانسیسی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق وہ امریکا کے ڈرون حملے میں ایرانی جنرل کی ہلاکت کے بعد مشرق وسطی میں کشیدہ ہونے والی صورتحال کو بہتر بنانے کے لیے مشرق وسطی کا دورہ کررہے ہیں۔

انہوں نے یہ بیان اپنے 5 روزہ دورے کے آغاز میں دیا جو تہران کی جانب سے جنرل قاسم سلیمانی کی ہلاکت کے جواب میں عراق میں امریکی فوجی اڈوں پر فائر کیے گئے میزائلز کے باعث خطے میں پڑگیا تھا۔تاہم جب ان خدشات میں کمی آئی تو جاپانی وزیراعظم اتوار کے روز اپنے دورے پر روانہ ہوئے اور سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان کے ایک گھنٹہ طویل اجلاس میں علاقائی کشیدگی پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

جاپانی وزارت خارجہ کے ترجمان مساتو اوتاکا کے مطابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ خطے میں ایسے کسی بھی فوجی تصادم کہ جس میں ایران جیسا ملک شامل ہو کے نتیجے میں نہ صرف خطے کے امن اور استحکام پر اثر پڑے گا بلکہ دنیا کا امن اور استحکام بھی متاثر ہوگا۔جاپانی وزیراعظم نے کشیدگی کے خاتمے کے لیے تمام متعلقہ ممالک سے سفارتی کوششوں میں شامل ہونے کا مطالبہ کیا۔


ای پیپر