مفت میں کروڑ پتی بننے والا پھر کوئلے بیجنے لگا
13 فروری 2019 (14:21) 2019-02-13

ایڈن برگ : کہا جاتا ہے کہ جو دولت بغیر محنت کے آتی ہے وہ اسی طرح واپس بھی چلی جاتی ہے ۔ اس کی سب سے بڑی مثال سکاٹ لینڈ کے رہنے والے مائیکل کارل کی ہے جو ایک انتہائی غریب انسان تھا ٗ جس کی 12ملین ڈالر کی لاٹری نکلی اوراس نے اتنے بڑے خزانے کو بھی اپنی عیاشیوں میں اڑا دیا اور آج وہ 12ڈالر فی گھنٹہ کی ایک عام سے نوکری کر رہا ہے اور اس کے پاس رہنے کیلئے گھر ہے نہ چلانے کیلئے کار۔

تفصیلات کے مطابق سکاٹ لینڈ کے رہنے والا مائیکل کارل انتہائی غریب نوجوان تھی مگر قسمت کی دیوی اس پر مہربان ہوئی اس کی 2002ء میں 12ملین ڈالر کی لاٹری نکل آئی۔ نوجوان کیلئے یہ قارون کا خزانہ تھا اور ایک ایسی نعمت جس کو اس نے محنت سے حاصل نہیں کیا تھا اس وجہ سے اسے اس نعمت کی قدر نہیں تھی۔

اس نے ان پیسوں سے ایک شاندار محل خریدا ٗ لگژری گاڑیاں خریدیں اور خود کو عیش و مستی میں گم کر دیا۔ اس کے اردگرد دوستوں کی لائنیں لگ گئیں ٗ اس کے چاہنے والے بے شمار ہوگئے مگر یہ دولت چند ہی سالوں میں ختم ہو گئی پھر اس کو وہی گھر اور گاڑیاں بیجنا پڑیں۔

آج مائیکل کارل اسی جگہ پر 12ڈالر فی گھنٹہ پر کوئلے فروخت کرتا ہے۔ اس کے ہاتھ میں اوزار ہوتے ہیں اور اس کا کہنا ہے کہ جو چیز محنت کے بغیر آتی ہے وہ اتنی تیزی سے واپس بھی چلی جاتی ہے‘‘۔


ای پیپر