قومی اسمبلی میں علی محمد خان اور مریم اورنگزیب میں تلخ کلامی
13 دسمبر 2019 (20:27) 2019-12-13

اسلام آ باد:قو می اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران وزیر مملکت پارلیمانی امور علی محمد خان اور مسلم لیگ (ن)کی ترجمان مریم اورنگزیب میں تلخ کلامی ہوگئی۔ مریم اورنگزیب نے کہا کہ آپ نے تحریری جواب میں لکھا کہ کوئی چوری نہیں ہوئی اور تقریر میں کہاکہ سب چور ہیں ، ایسے نہیں چل سکتا ، ہر سوال کا جواب شہباز شریف اور نواز شریف نہیں ہو سکتا۔وزیر مملکت علی محمد نے کہا کہ نہیں پتا کہ ان کو غصہ کس بات پر ہے کیا ان کو شہباز شریف کی کرپشن پر غصہ ہے ۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ  وزیر مملکت نے جوابات میں جھوٹ بولا ہے میں ثابت کروں گی،یہاں پی آئی ڈی والی پریس کانفرنس نہ کرائیں،2018ء میں پورا پاکستان چور اور ڈاکو قرار دیا گیا،200 ارب تو کبھی 600 ارب کے دعوے کئے گئے،پندرہ ماہ میں آپ کی ریکوری بھی آپ کی کارکردگی کی طرح صفر ہے، وقفہ سوالات میں پارلیمان نے ایگزیکٹو کا محاسبہ کرنا ہوتا ہے، سیاسی تقریر نہیں چاہئے ۔

علی محمد خان نے کہا کہ ان کے نیچے پی ٹی وی اڑھائی ارب کے خسارے میں تھا،اب35کروڑ کے منافع ہے کیا ان کو اس پر افسوس ہے؟ورلڈ اکنامک فورم نے پاکستان کے بارے میں لغو باتیں کیں یہ اس فورم کا یہاں حوالہ دے رہی ہیں، ان کے دور میں 20 صحافی شہید ہوئے ہمارے دور میں 3 صحافی شہید ہوئے،یہ اپنے دور کا جواب دیں۔


ای پیپر