فوٹوبشکریہ فیس بک

سپریم کورٹ نے خواجہ سراؤں کو عدالت عظمیٰ میں ملازمت دینے کا فیصلہ کرلیا
12 ستمبر 2018 (12:57) 2018-09-12

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے خواجہ سراؤں کو قومی دھارے میں لانے کے لیے عدالت عظمیٰ میں ملازمت دینے کا فیصلہ کرلیا۔

سپریم کورٹ میں خواجہ سراؤں کے حقوق سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ خیبرپختونخوا میں خواجہ سراؤں کی تذلیل کی جاتی ہے، جان لیوا دھمکیوں کا بھی سامنا ہے۔ اس طرح کے واقعات بدنامی کا سبب بنتے ہیں۔ خواجہ سراؤں کو حقوق دلانا ہماری اولین ترجیح ہے۔ عدالت نے خواجہ سراؤں کے خلاف ویب سائٹس کا بھی نوٹس لے لیا اور دو ہفتوں میں خواجہ سراؤں کے حقوق سے متعلق سفارشات طلب کرلیں۔

نیب حکام نے عدالت کو بتایا کہ نادرا نے 342 خواجہ سراؤں کو شناختی کارڈ جاری کئے۔ سیکرٹری لاء کمیشن نے کہا کہ 2015 سے اب تک 500 خواجہ سراء قتل ہوئے ، خواجہ سراؤں کے حوالے سے جو گائیڈ لائن بنائی اس پر وفاق نے تاحال جواب نہیں دیا۔

کیس کی مزید سماعت 2 ہفتے کیلئے ملتوی کردی گئی۔

 

 

 

 

 

 

 

 


ای پیپر