موٹروے زیادتی کیس :عابد ملہی کو پولیس نے کس ذریعے سے گرفتار کیا ؟
12 اکتوبر 2020 (22:33) 2020-10-12

لاہور: گجر پورہ زیادتی کیس کے مرکزی ملز م کو دن رات چھاپوں کے بعد بالآخر پولیس نے قابو کر لیا ہے ،ملزم عابد ملہی کو پکڑاونے میں اس کی بیوی نے مرکزی کردار ادا کیا ۔

تفصیلات کےمطابق گجر پورہ زیادتی کیس میں ملزم عابد ملہی کی بیوی نے پولیس کی مدد کر کے گرفتار کروایا ،ذرائع کے مطابق لاہور پولیس نے عا بد ملہی کی بیوی جدید ٹیکنالوجی استعمال کرتے ہوئے ایسا موبائل فون فراہم کیا تھا جس پر اس کی مانیٹرنگ کی جا رہی تھی ،ملزم عابد ملہی مختلف نمبروں سے بیوی کو کال کرتا تھا، اور اس سے رابطے میں تھا۔

لاہور پولیس اور حساس ادارے کی مانیٹرنگ ٹیم کو آج اطلاع ملی تھی کہ ملزم عابد ملہی نے اپنی بیوی کو ملاقات کے لیے فیصل آباد بلایا ہے جس کے بعد پولیس کی خصوصی ٹیم نے اس کی بیوی کو فیصل آباد پہنچایا اور حساس ادارے اور پولیس کی ٹیم نے سول لباس میں اس کی بیوی کا پیچھا کیا اور جب وہ بیوی سے ملاقات کے لیے نکلا تو پولیس نے بغیر کسی مزاحمت کے ملزم عابد ملہی کو گرفتار کرلیا۔

ذرائع کے مطابق ملزم عابد ملہی کی گرفتاری کے لیے پولیس نے باقاعدہ جال بنایا تھا جس میں وہ پھنس گیا۔ سفید کپڑوں میں ملبوس پولیس اہلکاروں نے بغیر کسی تشدد کے ملزم کو گرفتار کرلیا۔ میڈیا ذرائع کے مطابق ملزم عابد ملہی کی گرفتاری میں اس کی بیوی کی مدد حاصل کی گئی ہے۔ واضح رہے کہ ملزم عابد علی کو لاہور پولیس نے فیصل آباد میں مارے گئے چھاپے کے دوران گرفتار کیا۔

پنجاب پولیس نے خفیہ اداروں کی مدد سے انٹیلی جنس اطلاعات حاصل کرنے کے بعد فیصل آباد میں چھاپہ مارا اور ملزم کو گرفتار کر لیا۔ ملزم کو سانحہ گجر پورہ کے ایک ماہ اور 2 دن کے بعد گرفتار کیا گیا ہے۔ اس سے قبل سی سی پی او لاہور عمر شیخ نے کہا کہ عابد ملہی کو جلد گرفتار کرلیں گے، ملزم کی گرفتاری میں تاخیر کی مکمل ذمہ داری لیتاہوں، جرم کا ہوجانا اور اس کو روکا نہیں جاسکا یہ ہماری ذمہ داری ہے، لیکن میں نے اس بارے میں سینے پر ہاتھ مار کرکہا تھا کہ ملزمان کی نشاندہی 48گھنٹوں میں کروں گا، تاہم 72گھنٹوں میں ہی ہم نے ملزمان کا مکمل سراغ لگا لیا تھا۔


ای پیپر