فائل فوٹو

سید علی گیلانی کا عمران خان کے نام آخری خط
12 نومبر 2019 (14:27) 2019-11-12

سرینگر سے کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی نے وزیر اعظم پاکستان کے نام خط لکھا ہے۔ خط میں لکھا ہے کہ میں آپ کو مقبوضہ کشمیر کی نازک صورت حال کے بارے آگاہ کرنا چاہتا ہوں، ہوسکتا ہے یہ آپ کے ساتھ میرا آخری رابطہ ہو۔

علالت اور زائد عمری شاید دوبارہ آپ کو خط لکھنے کی اجازت نہ دے۔ موجودہ صورت حال میں آپ سے رابطہ ضروری ہی نہیں بلکہ قومی اور ذاتی ذمہ داری ہے۔

بھارت کی جانب سے متنازعہ علاقے کی حیثیت کو تبدیل کرنے پر آپ کی اقوام متحدہ میں تقریر قابل تعریف ہے، انیس سو سینتالیس سے بھارت کے جابرانہ قبضے کے خلاف کشمیریوں کی جدوجہد مختلف مراحل سے گزری ہے۔ کشمیری اپنی جدوجہد سے دست بردار نہیں ہوئے، بھارت کی جانب سے غیرقانونی فیصلوں کے بعد یہاں کی عوام مسلسل کرفیو جھیل رہی ہے۔

مواصلات، فون اور انٹرنیٹ بند ہے، ہزاروں کی تعداد میں بچے، بزرگ، تاجر، وکلاء، طلباء، ڈاکٹرز اور حریت قیادت کو قید کیا گیا ہے، پیلیٹ گن کا استعمال جاری ہے، عوام کو نوٹسز بھیجے جارہے ہیں کہ انکو انکے گھروں سے بے دخل کیا جائے گا۔ کشمیری خواتین کو ہراساں کرنے کا عمل جاری ہے، بھارتی اقدامات اقوام متحدہ کی قرار دادوں کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے۔

بھارت نے غیر قانونی اقدامات کرکے اپنے تئیں پاکستان سے ہوئے معاہدوں کو بھی ختم کیا ہے۔ بھارت کشمیر کی سیاسی حیثیت کو ختم کرنا چاہتا ہے۔ بھارت ہم سے ہماری زمین زبردستی چھیننا چاہتا ہے۔ پاکستان کی طرف سے کچھ مضبوط اور اہم فیصلوں کی ضرورت ہے۔ کشمیریوں کی جدوجہد اور پاکستان کی بقا کیلئے یہ اہم موڑ ہے۔

پاکستان کو کل جماعتی پارلیمانی میٹنگ طلب کرنی چاہیے، حکومتی سطح پر کچھ کارروائی عمل میں لانے کی ضرورت ہے۔ پاکستان بھارت کے ساتھ کئے گئے معاہدوں کو ختم کرنے کا اعلان کرے۔ حکومت پاکستان اور آزاد کشمیر اسمبلی کو کشمیری عوام کی کھل کر حمایت کرنے کی ضرورت ہے۔

کشمیری اس وقت پاکستان کی طرف دیکھ رہے ہیں۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارت کے جنگی اقدامات کے جواب میں پاکستان کو بھی اسی سطح پر جواب دینا ہوگا۔ مقبوضہ کشمیر کی عوام کسی بھی امکان کے لئے پوری طرح تیار ہے۔

پاکستان دوطرفہ معاہدوں شملہ معاہدہ، تاشقند معاہدہ اور لاہور معاہدے سے دستبردار ہونے کا اعلان کرے۔ ایل او سی پر معاہدے کے تحت بارڑ لگانے کے معاہدے کو بھی ازسرِ نو دیکھنے کی ضرورت ہے۔ حکومت پاکستان ان سارے فیصلوں کو لے کر اقوام متحدہ بھی جائے۔ مظلوم کشمیری عوام کی طرف سے آپکا اور پاکستانی عوام کی حمایت کا ایک دفعہ پھر شکریہ ادا کرتا ہوں۔


ای پیپر