Pakistan Covid-19,Black Fungus,Mucormycosis,Global pandemic, deadly virus, Pakistan, NCOC, lockdown
12 May 2021 (16:19) 2021-05-12

لاہور :بھارت کے بعد پاکستان میں خطرناک کورونا کی قسم نے ہر طر ف خوف و ہراس پھیلا دیا ہے ،پاکستان میں کورونا مریضوں میں مہلک بلیک فنگس کی تشخیص نے ماہرین کو نئی مشکل میں ڈال دیا ہے ،اب تک اس فنگس وائرس سے پاکستان میں چار افراد جاں بحق ہو چکے ہیں ،یہ فنگس ابتدائی طور پر ہی دفاغ اور پھیپھڑوں پر اثر انداز ہو تا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق بھار ت میں جہاں کورونا وائرس کی تیسری لہر بے قابو ہو چکی ہے وہیں پاکستان میں کورونا وائرس کی تیسری لہر میں بلیک فنگس نامی وائرس نے عوام میں خوف و ہراس پیدا کر دیا ہے ،اب تک کورونا وائرس کی اس قسم سے چار افراد زندگی کی بازی ہار چکے ہیں جن میں سے تین افراد کا تعلق کراچی سے ہے ۔

ماہرین کا کہنا ہے کورونا کی بلیک فنگس نامی اس تیسری قسم کے اب تک پاکستان میں زیادہ کیسز تو رپورٹ نہیں ہوئے لیکن اس کی ایک بڑی وجہ یہ بھی ہے کہ اگر یہ بلیک فنگس نامی وائرس کسی شخص کو متاثر کرتا ہے تو یہ جلد Detect  نہیں ہوتا ،مریضوں میں اس مہلک فنگس انفکیشن کی تشخیص مشکل سے ہوتی ہے۔

متعدی امراض کے ماہرین نے کہا ہے کہ بلیک فنگس دماغ اور پھیپھڑوں پر اثر انداز ہوتا ہے، یہ وہی فنگس ہے جو روٹیوں میں لگتا ہے ، فنگس کی علامات میں آنکھوں اور ناک کے ارگرد تکلیف اور سرخی، سانس لینے میں مشکلات، خون کی الٹی اور ذہنی حالت میں تبدیلیاں قابل ذکر ہیں۔

خیال رہے بھارت میں کورونا وائرس کےمریضوں میں بلیک فنگس عام ہونےلگا مہارشٹرامیں 2 ہزار سےزیادہ کورونا مریضوں میں بلیک فنگس پایا گیا، انڈین کونسل آف میڈیکل ریسرچ (آئی سی ایم آر) نے کورونا مریضوں میں میوکورمائیکوسس ( Mucormycosis) نامی اس بیماری کا انکشاف کیا ، جو بلیگ فنگس انفیکشن کے نام سے بھی جانا جاتا ہے ۔


ای پیپر