Source : Yahoo

احتساب عدالت میں نواز شریف کو آخری مہلت مل گئی
12 جون 2018 (15:10) 2018-06-12

اسلام آباد: احتساب عدالت نے نوازشریف کووکیل مقررکرنے کیلئے 19 جون تک کی مہلت دے دی ، دوران سماعت جج محمد بشیر اور نوازشریف کے درمیان مکالمہ ، نوازشریف بولے سپریم کورٹ میں تشہیرکیلئے اہلیہ کی عیادت کے ریمارکس دیے گئے کیا یہ ریمارکس دل دکھانے والے نہیں ؟ سپریم کورٹ کو کیس  واپس اپنے پاس لے لینا چاہیے، چاہیں توپھانسی پرلٹکائیں یا جیل بھیجیں۔

منگل کواحتساب عدالت میں سابق وزیر اعظم نوازشریف کے خلاف ایوان فیلڈ ریفرنس کی سماعت ہوئی ، کیس کی سماعت فاضل محمد بشیرنے کی۔ عدالت نے نوازشریف سے وکیل سے متعلق پوچھا تونوازشریف نے کہاکہ خواجہ حارث نے نوماہ اس مقدمے پرمحنت کی ہے ،انکی کی جگہ نیا وکیل ڈھونڈ اتنا آسان نہیں ، یہ اپنی نوعیت کا الگ کیس ہے ہفتے کے سات روزسماعت اورمانیٹرنگ جج کی کسی دوسرے مقدمہ میں مثال نہیں ملتی ۔

یہ مقدمہ اسپیڈ کے ساتھ چل رہا ہے ، جج محمد بشیرنے ریمارکس دیے دیگرمقدمات میں مانیٹرنگ جج تعینات ہوئے اوردوماہ کا وقت بھی دیا گیا اسپیڈی ٹرائل ہونا تواچھی بات ہے ، نوازشریف نے کہا کہ ایسا نہیں ہوتا آبزرویشن دی جائیں اورقدغن لگائی جائے سپریم کورٹ میں ریمارکس دئیے گئے تشہیرکیلئے اہلیہ کی عیادت کا کہتے ہیں کیا یہ ریمارکس دل دکھانے والے نہیں ؟ سپریم کورٹ کیس واپس اپنے پاس لینا چاہیے چاہیں توپھانسی پرلٹکائیں یا جیل بھیجیں ۔

نیب پراسیکیوٹرنے لندن فلیٹس ریفرنس میں مریم نوازکے وکیل حتمی دلائل شروع کرنے کا موقف اپنا تو امجد پرویزبولے کہ سپریم کورٹ کے آڈرکی کاپی نہیں ملی اورہفتے کوسماعت ہونے پردیگرکیسیزمتاثرہونگے ، جج محمد بشیر نے نیب کی استدعا مسترد کرتے ہوئے کہاکہ پہلے خواجہ حارث کا معاملہ دیکھ لیں دلائل بعد میں دیکھیں لیں گے ، عدالت نے نوازشریف کووکیل مقررکرنے کیلئے 19 جون تک کی مہلت دی اورلندن فلیٹس ریفرنس 14جون تک ملتوی کرتے ہوئے کہا کہ آئندہ سماعت پر نوازشریف اورمریم نوازکی حاضری ضروری نہیں۔


ای پیپر