فوٹو بشکریہ فیس بک

اعلیٰ عدلیہ نے ارشد ملک کو فارغ کر کے حقائق کو تسلیم کرلیا: مریم نواز
12 جولائی 2019 (14:10) 2019-07-12

لاہور: مریم نواز نے اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس کی جانب سے جج ارشد ملک کو عہدے سے ہٹانے کے حکم پر رد عمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ اللہ کا شکر! مگر معاملہ کسی جج کو معطل کئے جانے کا نہیں بلکہ اس فیصلے کو عدالتی ریکارڈ سے نکالنے کا ہے جو اس جج نے دباؤ میں دیا۔

مریم نواز نے اپنی ٹوئیٹ میں کہا کہ جج کو فارغ کرنے کا واضح مطلب یہ ہے کہ معزز اعلیٰ عدلیہ نے حقائق کو تسلیم کر لیا ہے۔ اگر ایسا ہی ہے تو وہ فیصلہ کیسے برقرا رکھا جا رہا ہے جو اس جج نے دیا ؟ اگر فیصلہ دینے والے جج کو سزا سنا دی ہے تو اس بے گناہ نواز شریف کو کیوں رہائی نہیں دی جارہی جس کو اسی جج نے سزا دی؟

اعلی عدلیہ سے مودبانہ گزارش کرتی ہوں کے فیصلے کو کالعدم قرار دیا جائے اور نواز شریف کو انصاف فراہم کرتے ہوئے کسی تاخیر کے بغیر رہا کیا جائے۔ اب یہ معاملہ نواز شریف تک محدود نہیں رہا۔ میں انصاف کے لیے اعلیٰ عدلیہ کی طرف دیکھ رہی ہوں، منتظر رہوں گی۔ شکریہ


ای پیپر