social media,twitter,70,thousand,accounts,block,trump,supporters
12 جنوری 2021 (09:30) 2021-01-12

واشنگٹن:سوشل میڈیا ویب سائٹس نے آزادی اظہار کے تمام اصولوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے امریکہ میں ٹرمپ کے 70 ہزار حامیوں کے ٹویٹر اکائونٹ بند کر دئیے ہیں اور تنبیہ کی ہے کہ ٹرمپ کے کسی بھی حامی کا اکائونٹ کسی بھی وقت بند کیا جا سکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکہ میں آزاد ی اظہار رائے پر مسلسل حملے ہو رہے ہیں ٗ ٹویٹر نے امریکی صدر کا ٹویٹر اکائونٹ ہمیشہ کیلئے بند کر دیا لیکن اب وہ تمام امریکی صدر ٹرمپ کو صدر دیکھنا چاہتے تھے ان کے سوشل اکائونٹ میں خطرے میں ہیں۔ ٹویٹر نے ابتدائی طور پر 70 ہزار ٹرمپ حامیوں کے ٹویٹر اکائونٹ شرپسندی پھیلانے کا الزام لگاتے ہوئے معطل کر دئیے ہیں جبکہ مزید اکائونٹس بھی بند کرنے کا عندیہ دیدیا ہے۔ یعنی ایسے تمام اکائونٹ ٹویٹر پر بند کر دئیے جائیں گے جن میں ٹرمپ کی حمایت ہوتی نظر آئیگی۔

مزید برآں جرمن چانسلر اینجلا مرکل نے امریکی صدر ٹرمپ کے ٹویٹر اکائونٹ کی بندش پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ آزادی اظہار رائے کی حدود طے کرنا حکومتوں کا کام ہے۔پرائیویٹ کمپنیوں کا نہیں۔امریکی صدر کا ٹویٹر اکائونٹ بند کرنا بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ یہ ہمیشہ سے قانون نافذ کرنے والے اداروں کا کام ہوتا ہے کہ وہ آئینی طور پر فیصلہ کریں کہ کس طرح کے قوانین انسانی پر لاگو ہونے چاہئیں اور انہیں آزادی اظہار کی کتنی آزادی ہونی چاہیے لیکن جب پرائیویٹ کمپنیاں یہ فیصلہ کرنا شروع کر دیں گے کہ انہوں نے کس کی زبان بندی کرنی ہے تو یہ خطرے کی بات ہے ۔


ای پیپر