Image Source : Facebook IK

مشکل وقت ضرور ہے لیکن ملک کا مستقبل روشن ہے :وزیر اعظم
12 فروری 2019 (19:31) 2019-02-12

اسلام آباد : وزیر اعظم عمران خان نے توانائی بحران کے اہم ترین اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملکی تجاری خسارے میں ایک ارب ڈالر کی کمی آئی ہے ،تمام وزارتوں کو اپنے اخراجات میں کمی کا کہا ہے ،عدم احتساب کے باعث ماضی میں لوگوں نے قومی خزانے کو بے دردی سے لوٹا ،ماضی میں لوٹ کھسوٹ کے باعث آج ملکی معیشت کا یہ حال ہے ،انہوں نے کہا کہ مشکل وقت ضرو ر ہے لیکن ملک کا مستقبل روشن ہے ۔

شیخ رشید کو مخاطب کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ شیخ صاحب ریلوے میں جو کرپشن اور چوری ہوئی اس کے کیسز نیب کو بھجوائیں ، وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ اب ہر ادارے میں کرپشن کے کیسز نیب کو بھجوائیں گے تاکہ لوگوں میں کرپشن کرتے ہوئے خوف ہو ، این آر او ون اور ٹو کے بعد کرپٹ لوگوں کا خوف ختم ہو گیا ہے ،ماضی میں حکومت نے جو قرضے لیے اسکے باعث ہماری حکومت 1دن کا سود 6ارب روپے ادا کر رہی ہے ،قرضوں کی قسط الگ سے دے رہے ہیں ، وزیر اعظم نے کہا تمام وزارتوں سے کہا ہے کہ اپنے اخراجات کو کم کریں ، وزیر اعظم نے پاکستان ریلوے لائیو ٹریکنگ سسٹم اور تھل ایکسپریش کا افتتاح بھی کر دیا ، وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ یہ ایک اچھی کاوش ہے جس کے ذریعے مسافروں اور ان کے اہلخانہ کو آسانی ہو گی ، وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ٹرین عام آدمی کے سفر کیلئے ہے،دنیا بھر میں عام آدمی کیلئے ٹرین کا سفر سستا ہے،ماضی میں اشرافیہ کیلئے پیسہ خرچ کیا گیا ،کوشش ہے کہ ریلوے کے نظام کو مزید بہتر کریں ،غریب طبقے کو سہولیات کی فراہمی ہماری حکومت کی ترجیحات میں سرفہرست ہے، چین اس وقت دنیا میں ریلوے نظام میں سب سے آگے ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ  گزشتہ 10 سالوں میں لوگوں نے بلاخوف چوریاں کیں،سی پیک کے تحت چین سے کئی شعبوں میں مدد چاہتے ہیں،چین سے ٹیکنالوجی پاکستان منتقل کرناچاہتے ہیں،ریلوے میں چوری اور کرپشن کیسزنیب کوبھیجیں، کرپشن کے باعث پاکستان کا قرضہ30ہزارارب ہوگیا،ماضی کی حکومتوں نے جو قرضے لیے اس کے باعث ہماری حکومت ایک دن کا سود 6 ارب روپے ادا کررہی ہے، حج پر سبسڈی دینے کی بات کرنے والے بتائیں کہ انہوں نے ملکی خزانے میں چھوڑا کیا ہے، ملک قرضوں میں نہ ڈوبا ہوتا تو ہم مفت حج کراتے ، پہلے وزیراعظم ہاﺅس میں کھانے کھلائے جاتے تھے لیکن اب صرف چائے اور بسکٹ سے ہی تواضع کی جاتی ہے، اور وزیراعظم کے خرچے 30 فیصد کم کردیئے ہیں اور ہروزیر سے کہا ہے کہ وہ بھی اپنے اخراجات میں کم از کم 10 فیصد کمی لائیں۔کرپشن ، چوری کے خلاف جہاد جاری رکھیں گے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ میں شیخ رشید کو تھل ایکسپریس اور لائیو ٹریکنگ سسٹم کے افتتاح پر مبارکباد دیتا ہوں ، ہم نے عام لوگوں اور امیروں کے لئے ٹرانسپورٹ میں کتنی ترقی کی اس سے ی سابقہ حکومتوں کی ترجیحات کا اندازہ ہوتا ہے ،سابقہ دور میں صرف ایلیٹ کو نوازا گیا، نئے پاکستان میں ہماری سوچ کا محور غریب عوام ہیں ، چھ مہینوں کی کارکردگی کے بعد ہماری اب کوشش ہے کہ ہم ٹرین سروسز کو اگلی سطح پر ترقی دیں ، ریلوے کی بہتری کےلئے شیخ رشید کی کارکردگی قابل تحسین ہے ۔ایل ایل ون منصوبے میں ریلوے انقلاب آئے گا ، کراچی سے لاہور صرف آٹھ گھنٹے میں پہنچ سکیں گے ، اس سے تمام لوگوں کو آسانی ملے گی 60سالوں میں ملک کا قرض صرف 6ہزار ارب روپے تھا جبکہ سابقہ حکومت نے صرف دس سالوں میں ملکی قرضے کو 30ہزار ارب کردیا ، کرپشن کو پکڑنے کا ناقص نظام ہونے کی وجہ سے کرپشن کو بڑھاﺅ ملا ۔آج ہم ملکی قرضوں کا صرف ایک دن کا سود6ارب روپے دے رہے ہیں ، ملک کے مقروض ہونے کی وجہ سے ہم لوگوں کو اہم سہولیات نہیں پہنچا پا رہے ، ہمیں اپنے خرچے مزید کم کرنے چاہیئں تاکہ ہم عام لوگوں کو تمام سہولتیں پہنچا سکیں ۔ ہم نے ہر قسم کا خرچہ کم کرنے کےلئے آڈیٹر بٹھا رکھا ہے ۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ٹرین عام آدمی کا سفر ہے ،ہم نے عام آدمی کے سفرکوآسان بنانا ہے،پہلے سی پیک ایک سڑک ،چارپاوراسٹیشنوں کا نام تھا،اب سی پیک کے تحت چین کےساتھ متعدد شعبوں میں کام کریں گے،حکومت میں 6 ماہ ہونے والے ہیں،نئے پاکستان میں لوگوں کوغربت سے نکالنا چاہتے ہیں۔وزیراعظم نے شیخ رشید کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ریلوے میں جوکرپشن اورچوری ہوئی اس کے کیسزنیب کوبھجوائیں،شیخ صاحب،ریلوے میں مزید خرچے کم کریں۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ قرضوں کی قسط الگ دے رہے ہیں،ماضی حکومت نے جو قرضے لیے اس کے باعث ہماری حکومت 1 دن کا سود 6 ارب روپے ادا کررہی ہے،این آراو ون اوراین آر اوٹوکے بعد کرپٹ لوگوں کا خوف ختم ہوگیا۔

انہوں نے کہا کہ 50 ارب روپے کی سالانہ گیس کی چوری ہے،گیس سیکٹرپر157 ارب روپے کے قرضے ہیں،گیس کی قیمتیں نہ بڑھاتے توگیس کمپنیاں بند ہوجاتیں،تمام وزارتوں کوکہا ہے کہ اپنے اخراجات کم کریں، اتنے قرضے نہ چڑھے ہوتے، تو حج کی سہولت مفت دیتے۔عمران خان نے کہا کہ دنیا بھر میں عام آدمی کے لئے ٹرین کا سفر سستا ہے، ایم ایل ون سسٹم کے ذریعے کراچی سے پشاور 8 گھنٹے میں پہنچ سکتے ہیں، پاکستان میں یہ سسٹم لانے کی کوشش کر رہے ہیں، چین دنیا میں ریلوے سسٹم میں سب سے آگے ہے ، سی پیک کے تحت چین سے ہر شعبے میں تعاون چاہتے ہیں۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پچھلے10 سال میں لوگوں کے دلوں سے خوف اٹھ گیا تھا، ہم نے وزیراعظم ہاوس کے 30 فیصد اخراجات کم کردیے ہیں،وزیراعظم ہاوس میں آڈیٹر بٹھایا، جو مزید خرچے کم کرنے پر توجہ دے رہا ہے، میں 30 فیصد خرچے کم کرسکتا ہوں، تو دیگر وزرا 10 فیصد کم کرسکتے ہیں. وزیر اعظم نے کہا کہ شیخ رشید نے بتایا ہے کہ ہفتہ وار6 کروڑ روپے مالیت کا مفت سفر ختم کر دیا ہے، کرپشن ، چوری کے خلاف جہاد جاری رکھیں گے، گیس کی قیمت نہ بڑھاتے، تو گیس کمپنیاں بند ہوجاتیں، مشکل وقت ضرور ہے مگر ملک کا مستقبل روشن ہے۔


ای پیپر