Preparations, PDM, Lahore jalsa, final stages, PTI government
12 دسمبر 2020 (10:49) 2020-12-12

لاہور: پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے جلسے کی تیاریوں آخری مراحل میں داخل ہوگئیں، پی ڈی ایم میں شامل سیاسی جماعتوں کی قیادت نے لاہور میں ڈیرے جما لئے۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری اور پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز بھی سیاسی سرگرمیوں میں مصروف ہیں جبکہ صدر پی ڈی ایم مولانا فضل الرحمان بھی آج لاہور پہنچ جائیں گے۔

ادھر ضلعی انتظامیہ نے عالمی وبا اور دہشتگردی کے پیش نظر جلسے کی اجازت نہ دینے کا نوٹیفیکیشن جاری کر دیا ہے۔ جس کے بعد پولیس نے بھی اپوزیشن کارکنوں کی پکڑ دھکڑ تیز کر دی ہے۔ رہنما ن لیگ عظمی بخاری، مشہود خان اور ایم پی اے اختر حسین کے گھروں پر چھاپے، پی ڈی ایم میں شامل دیگر جماعتوں کے رہنماؤں کی نظر بندی کے امکانات ہیں۔

دوسری جانب، ن لیگ کے ارکان قومی اور صوبائی اسمبلی کی جانب سے پارٹی قیادت کو استعفے جمع کرائے جانے کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ بورے والا سے منتخب ن لیگ کے ایم این اے سید ساجد مہدی سلیم نے بھی استعفیٰ پارٹی قیادت کو بھجوا دیا، کہتے ہیں پارٹی قیادت جو بھی فیصلہ کرے گی وہ قبول کریں گے۔

ترجمان مسلم لیگ ن مریم اورنگزیب نے حکومت پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ نااہل حکومت کا گھر جانا طے پاگیا، جو مرضی کرلیں تحریک رکنے والی نہیں، انہوں نے کہا کہ مقدمات اور جیل کی سلاخوں سے نہیں ڈرتے، حکومت عوامی تحریک کے سامنے ریت کی دیوار ثابت ہوگی۔

دوسری جانب وزیر اعظم کے معاون خصوصی شہباز گل کہتے ہیں جو گرجتے ہیں وہ برستے نہیں ، مریم صفدر نے کہا تھا 8 دسمبر کو آر یا پار ہو گا لیکن ہمیشہ کی طرح یہ بھی ایک جھوٹ تھا، انہوں نے مزید کہا کہ اپنے اعلان کے مطابق کل جلسے میں تمام ممبران کے استعفے جمع کرانے چاہئیں، لیکن نہیں کرائیں گے، یہ منافق استعفوں کی ایک اور جھوٹی تاریخ دیں گے۔


ای پیپر