اورینج لائن میٹرو ٹرین عظیم الشان منصوبہ
12 دسمبر 2019 2019-12-12

اورینج لائن میٹرو ٹرین عظیم الشان عوامی منصوبہ اور پاک چین کی دوستی کا لازوال تحفہ ہے چین نے پاکستان کی ترقی اور خوشحالی میں ہمیشہ اہم کرادار ادا کیا ہے ، اورینج میٹرو ٹرین بھی چین کے مالی تعاون سے مکمل کیا گیا ہے ۔ جس میں عام آدمی کیلئے بین اقوامی طرز کی جدید سفری سہولیات فراہم کی گئی ہیں اورینج لائن ٹرین کے روٹ کو اس طرح ڈیزائن کیا گیا ہے کہ زیادہ سے زیادہ آبادی اس سے مستفید ہو سکے یہ ٹرین علی ٹاؤن ، روائیونڈ روڈ سے شروع ہوکر براستہ ٹھوکر نیاز بیگ روڈ ،کینال ویو، ہنجر وال، وحدت روڈ، چوبرجی، لیک روڈ ،جی پی او ، لکشمی چوک، میکلورڈروڈ ، ریلوے سٹیشن ، سلطان پورہ، یو ای ٹی ، باغ بان پورہ، شالامار باغ، محمود بوٹی ، سلامت پورہ ، اسلام پارک اور ڈیرہ گجر نزد قائداعظم انٹر چینج ،رنگ روڈتک سفر کرے گی ۔ یہ پورا ٹریک گنجان آباد اور کاروباری علاقوں سے گزرتا ہے یومیہ تقریباً3لاکھ شہریوں کو عالمی معیار کی جدید اور آرام دہ سفری سہولتیں فراہم ہوں گی ۔ ٹرین کے 26سٹیشن قائم کئے گئے ہیں۔ ٹرین کی روانگی سے 27کلومیٹر کا اڑھائی گھنٹوں کا سفر 38منٹ میں طے ہو گا ۔ منصوبے کی ڈیزائننگ کے دوران اس امر کا خاص خیال رکھا گیا ہے کہ زمین کم سے کم ایکوائر کی جائے۔

چائنہ کی معروف کمپنی نے میٹرو ٹرین کو مکمل آٹومیٹک سسٹم کے تحت تیار کیا ہے جس میں کسی ڈرائیور کی ضرورت نہیں ہو گی ماحولیاتی آلودگی سے بچاؤ کے لئے ٹرین کو بجلی پر چلایا جائے گا جس کے لئے بجلی کے 2گرڈ سٹیشن بنائے گئے ہیں ۔ محمد شہباز شریف جب وزیر اعلیٰ تھے تو ٹرین کے روٹ پر متاثرین کیلئے 20 ارب روپے کا معاوضہ دیا گیا تھا۔

اورینج لائن میٹرو ٹرین ماڈل ٹاؤن اور رائیونڈ کے لئے نہیں بنایا گیا بلکہ یہ مزوروں ، طلبہ ، خواتین،

تاجر براداری، سرکاری ملازمین اور دکانداروں کیلئے چین کی تعاون سے بنایا گیا ہے۔ اس عظیم الشان منصوبے کی بنیاد محمد شہباز شریف نے رکھی تھی اوربلا آخر میٹرو ٹرین نے گزشتہ روز آزمائشی سفر کا آغاز کر دیا اور پنجاب کے وزیر ٹرانسپورٹ جہانزیب کھچی نے افتتاح کیا ، اس ٹرین کو عوام کیلئے کے لئے تین ماہ بعد اپریل 2020میں آپریشنل کیا جائے گا۔ میٹرو ٹرین 2سال قبل مکمل ہوتا لیکن لاہور ہائی کورٹ نے اورینج لائن میٹرو ٹرین کے خلاف حکم امتناع جاری کر دیا تھا کہ تاریخی عمارتوںکی 200فٹ تک تعمیر روک دی جائے ۔ حکم امتناعی کے بعد 22ماہ میٹرو ٹرین پر تعمیراتی کام بند کردیا گیا تھا ۔ڈالر کی بڑھتی ہوئی قیمت اور تحریک انصاف کے برسراقتدار آنے کے بعد منصوبہ التواء کا شکار رہنے کی وجہ سے لاگت مزید بڑھ گئی ۔ سپریم کورٹ آف پاکستان کے نوٹس پر اورینج ٹرین کو10دسمبر کو آزمائشی طور پر چلایا گیا ۔

واضح رہے کہ محمد شہباز شریف کے دس سالہ دوراقتدار میں عوام کی فلاح وبہبود کیلئے جو انقلابی اقدامات کئے گئے تھے پورے ملک میں اس کی مثال نہیں ملتی تعلیم ،صحت سمیت دیگر اداروں میں جو اصلاحات کئے ان کا فائدہ عام آدمی کو مل رہا ہے ۔ لاہور ، اسلام آبادپنڈی اور ملتان میٹرو بس کے آغاز سے ٹریفک کا دباؤ کم ہو گیا لوگوں کو بہترین سفری سہولیات میسر آگئی ہے ۔ ایئر کنڈیشن میٹرو بس کے ذریعے پنڈی اسلام آباد سیکرٹریٹ تک 20روپے میں لوگ VIPسفر کرتے ہیں ایک وقت کی بچت اور دوسری رقم کی بھی بچت ہو تی ہے ۔

محمد شہباز شریف جب دوسری بار وزیر اعلیٰ پنجاب منتخب ہوئے تو عوام کو سفر کی بہترین سہولیات کی فراہمی کیلئے ایئر کنڈیشن بس سروس شروع کرنے کا منصوبہ بنایا تھا لیکن پرویز مشرف مارشل لاء کے باعث منصوبہ ختم کر دیا گیا اور جب محمد شہباز شریف تیسری مرتبہ وزیر اعلیٰ منتخب ہوئے تو انہوں نے لاہور سمیت دیگر شہروں میں بس سروس شروع کردی تھی ۔ لاہور اسلام آباد پنڈی اور ملتان میٹرو کی کامیابی کے بعد عوام کے ساتھ اورینج لائن میٹرو ٹرین کا وعدہ کر دیا تھا اس وعدے کو نبھاتے ہوئے اورینج لائن میٹرو ٹرین کا منصوبہ شروع کیا گیا محمد شہباز شریف کا ٹریک ریکارڈ ہے وہ جو بات کرتے ہیں پورا کرکے دکھاتے ہیں اور اورینج لائن میٹرو ٹرین اس کی مثال ہے ۔ تحریک انصاف کی طرف سے محمد شہبازشریف کے منصوبوں کا مذاق اڑاگیا اور میٹرو بس کو جنگلہ بس کہا گیا اور ینج لائن میٹروٹرین کو قومی خزانے پر بوجھ قرار دیا گیا اور مخالفت شروع کی گئی لیکن محمد شہباز شریف نے تحریک انصاف کی مخالفت اوراُن کے الزامات کو مسترد کردیا تھا اور میٹرو ٹرین کی تکمیل کیلئے دن رات ایک کر دیئے گئے ،خراب صحت ہونے کے باوجود صبح سویرے اور رات گئے تک میٹرو ٹرین کی تعمیراتی منصوبے کا دورہ کرتے تھے اور بروقت تکمیل کیلئے کوشاں رہتے تھے ۔ تحریک انصاف کی طرف سے میٹرو ٹرین کی مخالفت کی جا رہی تھی لیکن اس منصوبے اورینج لائن میٹرو ٹرین کا افتتاح بھی کیا گیا ۔

محمد شہباز شریف اپنے بڑے بھائی محمد نواز شریف کے علاج معالج کے سلسلے میں لندن میں ہے پنجاب کے عوام میٹرو ٹرین کے افتتاح کے موقع پر اُنہیں نہیں بھولے سوشل میڈیا پر شکریہ ’’شہباز شریف ‘‘ کی مہم چلائے جارہی ہے اور عوام کی خواہش تھی کہ میٹرو ٹرین کا افتتاح محمد شہباز شریف کریں کیونکہ جو درخت محمد شہباز شریف نے لگایا تھا تناور درخت بن چکا ہے عوام اس کے پھل سے مستفید ہوںگے۔ آخر میں عوام کی طرف سے شکریہ ’’ شہباز شریف ‘‘ ۔


ای پیپر