ڈاکٹر ز کے بعد وکلاءکی میڈیا کو بھی دھمکی
12 دسمبر 2019 (16:45) 2019-12-12

لاہور :دل کے ہسپتال پر حملہ کرنے کے بعد بھی ڈاکٹر ز حضرات کا رویہ نرم نہ ہوا اور ڈاکٹرز کے بعد اب میڈیا کو بھی کھلی دھمکی دیدی ۔

تفصیلات کے مطابق پی آئی سی پر حملہ کرنے کے بعد وکلاءنے اب عدالتوں میں میڈیا کے داخلے پر بھی پابندی کی دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ اگر زخمی وکلاءکو ٹی وی سکرینوں پر نہ دکھا یا گیا تو میڈیا کی عدالتوں میں داخلے پر پابندی عائد کر دینگے ۔

جنرل سیکریٹری اسلام آباد ہائیکورٹ بار عمیر بلوچ نے مطالبہ کیا ہے کہ لاہور واقعے میں زخمی ہونے والے وکلاءکو بھی ٹی وی پر دکھایا جائے، ورنہ عدالتوں میں میڈیا کے داخلے پر پابندی لگا دیں گے۔عمیر بلوچ نے کہا کہ میڈیا صرف ڈاکٹرز دکھاتا ہے تو ہمیں تکلیف ہوتی ہے، وکلاءپر امن احتجاج کرنے پی آئی سی گئے تھے، ڈاکٹروں کے حملے کی وجہ سے مشتعل ہوئے۔

جنرل سیکریٹری اسلام آباد ہائیکورٹ بار کا کہنا ہے کہ چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس اطہرمن اللہ نے ہمیں احتجاج نہ کرنے کا کہا، ہم نے جواب دیا کہ جب آپ احتجاج کرتے تھے تو ہم آپ کے پیچھے چلتے تھے، آج ہم احتجاج کرتے ہیں تو کیا ٹھیک نہیں ہے؟

گزشتہ روز وکلاءکی جانب سے لاہور میں دل کے ہسپتال پر حملہ کر کے توڑ پھوڑ کی گئی تھی اور اس ہنگامہ آرائی کے دوران ایک خاتون سمیت متعدد مریض انتقال کر گئے تھے۔پی آئی سی میں ہنگامہ آرائی اور توڑ پھوڑ کے الزام میں پولیس نے 39 وکلاءکو گرفتار بھی کیا تھا جس کے خلاف آج پنجاب بھر میں وکلاءکی جانب سے ہڑتال کی جا رہی ہے۔


ای پیپر