Photo Credit Yahoo

 پاکستان کا بھی امریکی سفارتکاروں پر نقل و حمل سے قبل اجازت لینے کا حکم
11 مئی 2018 (16:45) 2018-05-11

اسلام آباد، واشنگٹن: امریکہ کی جانب سے پاکستانی سفارتکاروں پر سفری پابندیاں عائد کرنے کے اقدام کے جواب میں پاکستان نے بھی امریکی سفارتکاروں پر نقل و حمل سے قبل اجازت لینے کا حکم دیا ہے۔ اس حوالے سے دفتر خارجہ کی جانب سے نوٹیفکیشن بھی جاری کیا گیا ہے۔

نجی ٹی وی کے مطابق امریکی سفارتکاروں کا جو سامان کارگو کی صورت میں پاکستانی ایئرپورٹس پر آتا ہے اس پر جو پہلے خصوصی سہولیات دی جاتی تھیں اب وہ واپس لے لی گئی ہیں اور اس معاملہ کو ویانا کنونشن کے قوانین کے مطابق ڈیل کیا جائے گا جبکہ نوٹیفکیشن میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ امریکی سفارتخانہ کی جو اپنی گاڑیاں ہیں یا جو کرائے پر لی گئی گاڑیاں ہیں ان پر کالے شیشے لگانے کی اجازت نہیں ہو گی جبکہ سکیورٹی وجوہات کی بنیاد پر امریکی سفارتخانہ کی گاڑیوں کو غیرسفارتی نمبر پلیٹ لگانے کی اجازت ہوتی تھی اب وہ سہولت بھی واپس لی جا رہی ہے جبکہ پہلے امریکی جو پاکستان میں ٹیلی فون سم استعمال کرتے تھے جو ان کے اپنے نام پر نہیں ہوتی تھی اب وہ بھی انہیں اس طرح جاری نہیں کی جائے گی۔

واضح رہے کہ امریکہ نے جمعہ کے روز سے پاکستانی سفارتکاروں کے شہر سے باہر 25 میل سے دور جانے کی صورت میں میں امریکی حکام سے اجازت لینے کی شرط عائد کر دی ہے جس کے جواب میں پاکستانی دفتر خارجہ کی جانب سے امریکی سفارتکاروں پر بھی اس قسم کی پابندیاں عائد کر دی ہیں جبکہ نجی ٹی وی سے انٹرویو میں امریکہ میں متعین پاکستانی سفیر اعزاز احمد چوہدری کا کہنا تھا کہ امریکہ نے اپنے اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کے ذریعے ہمیں اطلاع کی ہے کہ جمعہ کے روز سے 25میل کے احاطہ میں ہمارے سفارتکار اور سفارتخانہ میں کام کرنے والے اہلکار رہیں گے اور اگر کسی نے باہر جانا ہو تو اس کو پانچ دن پہلے اجازت لینا ہو گی۔ ہم سمجھتے ہیں کہ اس طرح کے کام درست نہیں۔ پاکستان اور امریکہ کے تعلقات میں اس قسم کی ترشی لانا ٹھیک نہیں۔


ای پیپر