Molana Fazlurehman,PDM,Budjet 2021-2022,Bilawal Bhutto,Shahbaz Sharif,Reaction
11 جون 2021 (20:29) 2021-06-11

 اسلام آباد :مولانا فضل الرحمن نے بجٹ پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ حکومت نے قوم کے سامنے غلط اعداد و شمار پیش کئے ،حکومت غلط بیانی سے کام لے رہی ہے ،معیشت دو سال سے جمود کا شکار ہے ،آج حکومت اپنی ناکامی کا ملبہ سابقہ حکومتوں پر ڈال رہی ہے ،اپنی کارکر دگی کو چھپانے کیلئے ملبہ سابقہ حکومتوں پر ڈالنا آسان ہو تا ہے ۔

سربراہ جمیعت علما ءاسلام مولانافضل الرحمن کا کہنا تھا ہر محاذ پر حکومت کے ان اوچھے ہتھکنڈوں کا مقابلہ کریں گے،ملک کے دینی حلقوں کو اس قانون کا نشانہ بنایا جارہا ہے،ملک میں خلاف شریعت قانون سازی کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے،انہوں نے کہا ہم حکومت مخالف پالیسیوں پر عوامی ردعمل دکھانے کیلئے 4جولائی کو سوات ،29جولائی کو کراچی میں جلسہ کر رہے ہیں ،ان دونوں جلسوں میں عوام کی پہلے سے زیادہ شمولیت ہوگی۔

مولانا فضل الرحمن نے کہا صحافیوں سے گفتگو کے دوران کسی بھی اپوزیشن لیڈر پر تنقید کرنے سے گریز کرتے ہوئے کہا کہ تنقید کرنا آسان ہو تا ہے ،نااہل حکومت 3 سال میں ٹرین کی حالت کیوں درست نہ کرسکی؟آج ٹرین کا حادثہ ہوا،اس کا ملبہ بھی پچھلی حکومت پر ڈال دیا گیا،آج حکومت نے بجٹ اجلاس میں جو جھوٹ کا پلندہ بولا ہے وہ جلد عوام کے سامنے کھل جائیگا ،حکومت کی شکل ایسی ہوچکی ہے’’ اونٹ رے اونٹ تیری کون سی کل سیدھی‘‘۔

انہوں نے کہا ملک میں گدھوں کی تعداد بڑھنے کا کریڈٹ عمران خان کو جاتا ہے،حکمران جماعت میں بیٹھے طبقے کو ملک کے عام آدمی کی پریشانی کا کوئی خیال نہیں ،ایک طبقہ ہے جو اپنی خوشحالی کو ملک و قوم کی خوشحالی تصور کرتا ہے،ہم ان نا اہل حکمران کو گھر بھیجنے کیلئے جدو جہد کرتے آ رہے ہیں اور کرتے رہینگے ۔

مولانا فضل الرحمن نے کہا قوم نے فیصلہ کرنا ہے کیا ان کی غلامی کرنی ہے یا آزادفضا میں سانس لینا ہے،فیٹف اور آئی ایم ایف ایسٹ انڈیا کمپنی بن کر ہماری آزادی چھین رہی ہے،معیشت کے اگلے 2 سال بھی جمود میں رہنے کی توقع ہے،بجٹ میں پوری قوم کے سامنے غلط بیانی کی گئی ہے،قوم کے سامنے غلط اعداد و شمار پیش کئے گئے ہیں۔


ای پیپر