United States, bombers, drones, warplanes, Taliban, influence, New York Times
11 جون 2021 (14:07) 2021-06-11

واشنگٹن: امریکی اخبار نیویارک ٹائمز نے دعویٰ کیا ہے کہ امریکہ کابل میں طالبان کے اثرو رسوخ بڑھنے پر بمبار ڈرون یا جنگی طیاروں سے حملے کرسکتا ہے ۔

رپورٹ کے مطابق امریکی محکمہ دفاع ، کابل اور بڑے شہروں کے تحفظ کے لیے امریکی صدر سے فضائی حملوں کی اجازت مانگنے پر غور کر رہا ہے ۔ غیر ملکی سفارتخانوں کو طالبان کے ممکنہ حملوں سے بچانے کے لیے بمباری کے آپشن پر غور کیا جا رہا ہے ۔ امریکی انخلا کے بعد فضائی حملے مشرق وسطیٰ میں قائم ہوائی اڈوں سے ہوسکتے ہیں ۔

دوسری جانب افغان طالبان نے مطالبہ کیا ہے کہ ترک افواج بھی افغانستان سے نکل جائیں ۔ طالبان کے ترجمان سہیل شاہین کے مطابق امریکا کے ساتھ امن ڈیل کے تحت افغانستان میں تعینات تمام غیر ملکی افواج کا انخلا ہو جانا چاہیے ۔

اس سے قبل ترکی کی جانب سے امریکی اور نیٹو افواج کے انخلا کے بعد کابل کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کی حفاظت کرنے کی پیشکش کی گئی تھی ۔ افغانستان میں تعینات ترک افواج بھی نیٹو مشن کا حصہ ہیں ۔ طے شدہ پروگرام کے مطابق تمام غیر ملکی افواج 11 ستمبر تک افغانستان سے نکال لی جائیں گی ۔


ای پیپر