کشمیری عوام پر بھارتی مظالم کیخلاف قومی اسمبلی میں قرارداد منظور
11 اپریل 2018 (17:49) 2018-04-11

اسلام آباد: قومی اسمبلی میں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی قابض افواج کے ہاتھوں نہتے کشمیری عوام پر ڈھائے جانے والے مظالم کیخلاف متفقہ قرار داد منظور کر لی گئی۔


تفصیلات کے مطابق قرار داد میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ حکومت مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کے مظالم پر بین الاقوامی برادری ،بین الپارلیمانی یونین ،بین الاقوامی اداروں اور سول سوسائٹی کو متحرک کرے کہ وہ بھارت پر اس حوالے سے دبائو ڈالے، مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کو فوری طور پر بندکیا جائے ،سپیشل پاور ایکٹ پبلک سیفٹی ایکٹ اور کشمیری عوام کی آواز کو دبانے والے تمام کالے قوانین کا خاتمہ، میڈیا کے خلاف عائد پابندیوں اور صحافیوں کو ہراساں کرنے کا سلسلہ بندکیا جائے، حریت رہنمائوں سمیت گرفتارتمام سیاسی لوگوں کو رہا کیا جائے۔ جنیوا میں انسانی حقوق کی کونسل مقبوضہ کشمیر میں حقائق جانچنے کیلئے مشن بھیجے۔


وفاقی وزیر امور کشمیر و گلگت بلتستان چوہدری برجیس طاہر نے قرارداد پیش کی۔قرار داد کے متن میں کہا گیا ہے کہ یہ ایوان مقبوضہ جموں و کشمیر میں بھارتی قابض افواج اور سیکیورٹی اداروں کے ہاتھوں کشمیری عوام کے خلاف بہیمانہ اقدامات جن کے نتیجے میں حالیہ دنوں میں 20 سے زائد افراد شہید اور متعدد زخمی ہو چکے ہیں کی شدید مذمت کرتا ہے۔مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کی جانب سے پرامن مظاہرین پر اندھا دھند فائرنگ مسلمہ بین الاقوامی اصولوں اور انسانی حقوق کی سنگین پامالی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ مقبوضہ علاقوں میں آزادی اظہار پر پابندی ہے۔ سوشل اور ماس میڈیا پابندیوں کی زد میں ہے۔ یہ ایوان کشمیری عوام کے حق خودارادیت کے لئے جائز اور پرامن جدوجہد کی مقبول عوامی تحریک کی مکمل حمایت کرتا ہے۔


ای پیپر