ایران نے سعودی عرب کیساتھ مذاکرات کی تصدیق کر دی
سورس:   فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر
10 May 2021 (23:13) 2021-05-10

تہران: ایران نے سعودی عرب سے مذاکرات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ خطے کے دو عظیم اسلامی ممالک کے درمیان اچھے تعلقات پورے خطے کے مفاد میں ہیں تاہم ان مذاکرات سے نتائج اخذ کرنا قبل از وقت ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان سعید خطیب زادے نے سعودی عرب سے مذاکرات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ خطے کے دو عظیم اسلامی ممالک کے درمیان کشیدگی میں کمی پورے خطے اور اس کے لوگوں کے مفاد میں ہیں اور اس سلسلے میں ایران اپنی پوری کوشش کرے گا۔ 

ان کا کہنا تھا کہ ذمہ دار ملک ہونے کے ناطے دونوں ملکوں کے درمیان مسائل کے حل کا خیرمقدم کرتے ہیں، باہمی تعلقات کیلئے بامعنی سمجھوتوں پر پہنچنے کی قوی امید ہے اور اس سلسلے میں ایران اپنی بھرپور کوشش کرے گا۔

خیال رہے کہ عراق کے دارالحکومت بغداد میں سعودی عرب اور ایران کے درمیان مذاکرات کی خبریں اپریل میں سامنے آئی تھیں جس کی اب ایران کی جانب سے تصدیق کی گئی ہے۔ عراقی حکومت اور سفارتی ذرائع نے ان میڈیا اطلاعات کی تصدیق کی تھی جن کے مطابق اپریل میں ایرانی اور سعودی عہدیداروں کے درمیان بغداد میں ایک ملاقات ہوئی تھی۔

یہ ایران اور سعودی عرب کے درمیان سال 2016ءمیں سفارتی تعلقات کے خاتمے کے بعد پہلی اعلیٰ سطحی ملاقات تھی۔ ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان سعید خطیب زادہ نے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’ان مذاکرات کے مقاصد باہمی اور علاقائی ہیں، ہمیں ان کے نتائج کیلئے انتظار کرنا ہو گا۔‘

ان کا مزید کہنا تھا کہ ابھی ان مذاکرات کی تفصیلات کے بارے میں بات کرنا قبل از وقت ہو گا تاہم ایران ہر سطح پر کئے جانے والے مذاکرات کا خیر مقدم کرتا ہے۔ رپورٹس کے مطابق عراقی دارالحکومت بغداد میں ہونے والے ان مذاکرات میں عراقی وزیر اعظم مصطفی الکاظمی نے اہم کردار ادا کیا اور ایک عراقی عہدیدار نے غیر ملکی خبر رساں ادارے سے بات کرتے ہوئے ان دونوں ممالک کے درمیان مذاکرات کی تصدیق کی تھی۔ 

یاد رہے کہ دونوں ممالک شام اور یمن کے تنازعات میں مخالف قوتوں کی حمایت کرتے ہیں، ایران یمن میں حوثی ملیشیا کی حمایت کرتا ہے جبکہ سعودی عرب کے زیر قیادت اتحاد یمن میں حوثی باغیوں کے خلاف جنگ لڑ رہا ہے۔ ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان سعید خطیب زادہ کا کہنا تھا کہ ’دو بڑے مسلمان ممالک میں کشیدگی میں کمی اور تعلقات میں بہتری خطے اور دونوں ممالک کیلئے فائدہ مند ہو گی۔‘


ای پیپر