پاکستان میں امن افغانستان کے امن واستحکام سے منسلک ہے،سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ

10 مارچ 2018 (17:56)

واشنگٹن:سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ نے کہاہے کہ پاکستان اورامریکہ باہمی اعتماد کے فروغ اور خطے میں استحکام کے مشترکہ ہدف کیلئے ملکر کام کرنے کے طریقوں پر غور کرنے کیلئے اعلیٰ سطح پررابطے میں ہیں ¾بھارت اپنے اندرونی مسائل سے عالمی توجہ ہٹانے کیلئے کنٹرول لائن پرکشیدگی پیدا کرنے کی کوشش کررہاہے۔گزشتہ روز غیرملکی صحافیوں کو ایک بریفنگ میں سیکرٹری خارجہ نے کہاکہ دونوں ملکوں کے درمیان اعلیٰ سطح کے حالیہ رابطوں کامقصد ایک دوسرے کے موقف کو بہتر طورپر سمجھنا ہے۔انہوں نے کہاکہ پاکستان اورامریکہ دہشت گردی کے خلاف جنگ اور القاعدہ کے مکمل خاتمے میں کامیاب شراکت دار رہے ہیں۔

انہوں نے اپنی سرزمین سے ہرقسم کی دہشت گردی کے مکمل خاتمے کے مضبوط پاکستانی عزم کااعادہ کیا۔ تہمینہ جنجوعہ نے کہاکہ پاکستان میں امن افغانستان کے امن واستحکام سے منسلک ہے اورپاکستان شورش زدہ ملک میں امن کے قیام کیلئے افغانیوں کی اپنی قیادت سے ان کے شروع کردہ مفاہمتی عمل کاحامی ہے۔سیکرٹری خارجہ نے کہاکہ انہوں نے امریکی حکام کے ساتھ اپنی ملاقاتوں میں سرحدی نظم ونسق اور دہشت گردوں کی طرف سے پاکستان کے خلاف افغانستان میں موجود محفوظ ٹھکانوں کے استعمال کے پاکستانی خدشات کو واضح کیا۔ پاکستان اوربھارت کے درمیان جاری کشیدگی اور کنٹرول لائن پر فائرنگ کے تبادلے سے متعلق ایک سوال کے جواب پر سیکرٹری خارجہ نے کہاکہ بھارت اپنے اندرونی مسائل سے عالمی توجہ ہٹانے کیلئے کنٹرول لائن پرکشیدگی پید

مزیدخبریں