فوٹوبشکریہ فیس بک

چوہدری نثار، جگنو محسن کا پنجاب اسمبلی میں آزاد حیثیت برقرار رکھنے کا فیصلہ
10 اگست 2018 (10:56) 2018-08-10

لاہور: سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار اور نجم سیٹھی کی اہلیہ جگنو محسن نے کسی بھی سیاسی جماعت میں شمولیت کا بیان حلفی الیکشن کمیشن میں نہیں جمع کروایا۔

تفصیلات کے مطابق چوہدری نثار اور جگنو محسن نے پنجاب اسمبلی میں آزاد حیثیت برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ الیکشن کمیشن کی جانب سے کامیابی کا نوٹیفکیشن جاری ہونے کے تین دن کے اندر آزاد امیدواروں کو آئین کے آرٹیکل 61 کے تحت کسی بھی سیاسی جماعت میں شمولیت اختیار کرنے کا حق حاصل ہوتا ہے اور بیان حلفی جمع کروانا ہوتا ہے تاہم وہ وقت گزشتہ شام چار بجے ختم ہو گیاہے تاہم چوہدری نثار ، جگنو محسن اور احمد علی نے آزاد حیثیت میں ہی صوبائی اسمبلی میں بیٹھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

دوسری جانب تین آزاد امیدواروں نے سیاسی جماعتوں میں شمولیت کیلئے بیان حلفی الیکشن کمیشن میں جمع کروا دی ہے۔

واضح رہے کہ الیکشن کمیشن نے آزاد امیدواروں کو سیاسی جماعت میں شمولیت کیلئے کل تک کی ڈیڈ لائن دی تھی۔ الیکشن کمیشن نے آزادامیدواروں کے بیان حلفی کا نمونہ جاری کر دیا تھا۔ بیان حلفی اوتھ کمشنر کی مہر کے ساتھ الیکشن کمیشن کو فراہم کیا جانا تھا۔

الیکشن کمیشن کا کہنا تھا کہ آزاد امیدوار بغیر کسی دباؤ یا شرط کے سیاسی جماعت میں شمولیت کا بیان حلفی دے۔ سیاسی جماعت کا سربراہ بھی آزاد امیدوار کی پارٹی شمولیت سے متعلق رضامندی کا سرٹیفکیٹ دے۔ بیان حلفی اور پارٹی سرٹیفکیٹ متعلقہ صوبائی الیکشن کمشنر یا ڈپٹی ڈائریکٹر کوآرڈی نیشن الیکشن کمیشن کے پاس جمع کرائے جا سکتے ہیں۔

 

 

 

 

 

 


ای پیپر