نواز شریف نے اپنے کاروباری معاملات کو مسئلہ کشمیر پر ترجیح دی : عمران خان
10 اپریل 2018 (15:17)

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ نوازشریف نے اپنے کاروباری مفادات کو مسئلہ کشمیر اور قومی مفاد دونوں پر ترجیح دی ،مودی سرکار بزور قوت اہل کشمیر کے حقوق غصباور کشمیر میں انسانی حقوق پامال کرتی ہے، پاکستان میں کوئی عسکری یا سویلین رہنما امن اور بھارت سے بہتر تعلقات کا مخالف نہیں، حکومت کے پاس کشمیر پر کوئی واضح حکمت عملی موجود نہیں، تحریک انصاف کشمیر کے حوالے سے مکمل سوچ رکھتی ہے، اقتدار میں آئے تو کشمیر پر جامع، متحرک اور موثر پالیسی بنائیں گے۔


سری نگر کے جریدے کو انٹرویو میں عمران خان نے کہا کہ بندوق کی نوک پر امن اور خوشگوار تعلقات ممکن نہیں، مودی سرکار بزور قوت اہل کشمیر کے حقوق غصب کرتی اور کشمیر میں انسانی حقوق پامال کرتی ہے۔انہوں نے کہا کہ تنازعہ کشمیر مرکزی حیثیت کا حامل ہے جس کا حل کیا جانا ناگزیر ہے، مشرقی تیمور کی طرح تنازعہ کشمیر کا حل بھی سلامتی کونسل کی قراردادوں میں پوشیدہ ہے۔پاکستان میں کوئی عسکری یا سویلین رہنما امن اور بھارت سے بہتر تعلقات کا مخالف نہیں، مسئلہ کشمیر پاک بھارت تعلقات کی نوعیت کا تعین کرتا ہے۔


عمران خان نے کہا کہ نواز شریف نے اہل کشمیر کی حق خودارادیت کی تحریک کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا، انہوں نے مودی کی تقریب حلف برداری میں شرکت کے موقع پر حریت قیادت سے ملاقات تک نہ کی، نواز شریف نے حریت قیادت سے ملاقات کرکے اہل کشمیر کی آواز بننے کی بجائے اپنے کاروبار کو فوقیت دی ، انہوں نے اپنے کاروباری مفادات کو مسئلہ کشمیر اور قومی مفاد دونوں پر ترجیح دی ۔انہوں نے کہا کہ کشمیر کمیٹی ہر لحاظ سے ناکامی کا استعارہ ہے، حکومت کے ہاں کشمیر پر کوئی واضح حکمت عملی موجود نہیں، کشمیر کمیٹی کے مولانا کی ساکھ ایسی ہے کہ یورپ کے کئے ممالک انہیں ویزہ تک نہیں دیتے جب کہ قومی اسمبلی کے اسپیکر کشمیر کمیٹی پر اٹھنے والے اخراجات قوم کے سامنے رکھنے کو تیار نہیں۔


ای پیپر