پارٹی چھوڑنے والے لوگ ریاست کو بدنام کرتے ہیں: نواز شریف
10 اپریل 2018 (12:39) 2018-04-10

اسلام آباد: پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد سابق وزیراعظم میاں نواز شریف نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) چھوڑنے والے کل بھی ہمارے نہیں تھے آج بھی نہیں ہیں ایسے لوگ ریاست کو بدنام کرتے ہیں یہ لوگ آمریت میں ان کے ساتھ مل جاتے ہیں جمہوریت میں ہمارے ساتھ‘ ہم پرامید ہیں کہ 2018 میں ووٹ شیر کو ہی پڑے گا‘ سینٹ الیکشن اور بلوچستان کو پارٹی بنانیوالوں پر بھی کچھ وارد ہوا تھا‘ تمام سیاسی پارٹیوں کو اصولوں کی سیاست کرنی چاہئے‘ عمران خان کا سیاست میں آنا نیک شگون نہیں ہے‘ لاپتہ افراد کا معاملہ بڑا سنگین ہے‘ جنوبی پنجاب کے لوگ مسلم لیگ (ن) سے اتنے ہی مطمئن ہیں جتنے وسطی اور بالائی پنجاب کے لوگ ‘ لودھراں کا الیکشن جنوبی پنجاب کے لوگوں کا مسلم لیگ (ن) پر اعتماد تھا۔


نواز شریف نے احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مسلم لیگ (ن) چھوڑنے والوں کا مسلم لیگی بیک گرائونڈ نہیں تھا جنوبی پنجاب میں بھی ترقی ہوئی ہے۔ شہباز شریف نے جنوبی پنجاب میں بہت کام کیا ہے پارٹی چھوڑنے والے کل بھی ہمارے نہیں تھے اب بھی نہیں ہیں ۔ لودھراں کا الیکشن ہمارے ریکارڈ ترقیاتی کاموں پر اعتماد کا اظہار ہے۔ لودھراں کے الیکشن میں 180ڈگری کا ٹرن آیا تھا یہ وہ لوگ ہیں جنہوں نے میرے صدارت پر ووٹ نہیں دیا تھا۔ یہ لوگ ہماری نظر میں تھے ایسے لوگ سیاست کو بدنام کرتے ہیں ۔


انہوں نے کہا کہ یہ لوگ آمریت کے دور میں ان کے ساتھ مل جاتے ہیں جمہوری دور میں ہمارے ساتھ۔ ہم پرامید ہیں کہ 2018 میں صرف شیر کو ووٹ پڑے گا سینٹ الیکشن اور بلوچستانکو پارٹی بنانے والوں پر بھی کچھ وارد ہوا تھا۔ ایک جی پی ایس ہے جس کی طرف سارے چلے جاتے ہیں ۔ پنجاب کی 9سیٹیں کم کردی گئیں لیکن ہم نے ملکی فاد میں اسے بھی قبول کیا۔ تمام سیاسی پارٹیوں کو اصولوں کی سیاست کرنی چاہئے۔ تمام سیاسی پارٹیوں کو اصولوں کی سیاست کرنی چاہئے۔ فیصلہ جو بھی ہو انصاف پر ہونا چاہئے۔ عمران خان کا سیاست میں آنا نیک شگون نہیں ہے جنہوں نے کرپشن کی اور ملک کا پیسہ لوٹا وہ ملک کی سیریں کرتے پھر رہے ہیں ۔


سابق وزیر اعظم نے کہا کہ لاپتہ افراد کا معاملہ بہت بڑا ایشو ہے کسی کو لاپتہ کردینا ایک بہت بڑا جرم ہے کیا لاپتہ افراد کے والدین اور بچوں کی زندگی سکون سے گزرے گی؟ ان پر کیا گزرتی ہوگی جن کو یہ بھی پتہ نہ ہو کہ ان کے پیارے زندہ بھی ہیں یا نہیں۔ بلوچستان میں ایک پارٹی اچانک وارد ہوئی ویسے ہی کل کچھ لوگوںکے دلوں میں جنوبی پنجاب صوبے کی محبت جاگ اٹھی۔ جنوبی پنجاب کے لوگ مسلم لیگ (ن) سے اتنے ہی مطمئن ہیں جتنے وسطی اور بالائی پنجاب کے لوگ ۔ لودھراں جنوبی پنجاب کا دل ہے لودھراں میں عوام نے مسلم لیگ (ن) کے ایک غیر معروف امیدوار کو جتوا دیا۔


ای پیپر