Biden administration, US President, drone strikes, war-torn areas, Iraq, Afghanistan
09 مارچ 2021 (08:43) 2021-03-09

نیویارک: جوبائیڈن انتظامیہ نے جنگ زدہ علاقوں سے باہر ڈرون حملے روک دیئے ، اب افغانستان ، عراق اور شام کے سوا دیگر مقامات پر ڈرون حملوں سے پہلے اجازت لینا ہوگی ۔

اس حوالے سے ترجمان پینٹا گون کا کہنا تھا کہ پابندی مستقل نہیں لگائی جا رہی ، اس کا مطلب یہ نہیں کہ ڈرون حملے نہیں کیے جائیں گے ۔

جان کربی نے مزید کہا کہ بین الاقوامی پارٹنرز کے ساتھ انتہا پسندوں کے خاتمے کے لیے پُرعزم ہیں ۔ انتہا پسندوں کی جانب سے دھمکیوں اور حملوں کے خطروں سے بخوبی آگاہ ہیں ۔

دوسری جانب امریکی اخبار نے دعویٰ کیا ہے کہ بائیڈن کے صدر منتخب ہوتے ہی فوجی قیادت کو یہ نیا ہدایت نامہ خفیہ طور پر بھیج دیا گیا تھا ۔

واضح رہے کہ سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ امریکا کو جنگ سے دور رکھنے کے حق میں تھے اس لیے انہوں نے عراق اور افغانستان سے کافی تعداد میں فوج واپس بلا لی تھی ۔ اس کے علاوہ ٹرمپ کے دور میں افغان معاہدے پر عملدرآمد شروع ہوا ۔ لیکن جوبائیڈن کی جنگی پالیسی سابق حکومت سے مختلف معلوم ہوتی ہے ۔ وہ افغانستان سے مکمل فوج کے انخلا کے حق میں نہیں ہیں ۔


ای پیپر