آصف زرداری کے گھر اور فیکٹری سے سکیورٹی اہلکار واپس بلا لئے گئے
09 جولائی 2018 (15:34) 2018-07-09

نواب شاہ:پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کے گھر اور شوگر ملز پر سیکیورٹی مقاصد کے لیے تعینات 150 سے زائد پولیس کو واپس بلا لیا گیا۔

میڈیا گفتگو کرتے ہوئے شہید بینظیر آباد کے ایس ایس پی رائی اعجاز احمد نے تصدیق کی کہ سپریم کورٹ کی ہدایت پر اضلاع کے مختلف علاقوں میں آصف علی زرداری کی ملکیت پر تعینات پولیس افسران کو تھانے رپورٹ کرنے کا حکم جاری کردیا گیا۔ چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کے حکم پر ملک بھر میں غیر متعلقہ سیاسی اور غیر سیاسی شخصیات کی سیکیورٹی پر تعینات کل 12 ہزار 600 پولیس اہلکاروں کو واپس بلانے کا حکم دیا تھا۔رواں برس اپریل میں سیکیورٹی اداروں کی جانب سے عدالت عظمیٰ میں شماریاتی رپورٹ جمع کرائی گئی تھی جس میں بتایا گیا عدالتی حکم پر پنجاب میں 4 ہزار 610، سندھ میں 5ہزار 5، خیبرپختونخوا میں 2 ہزار، بلوچستان میں 829، اسلام آباد میں 246 پولیس اہلکاروں کو واپس اسٹیشن پر بلا لیا گیا۔

ایس ایس پی اعجاز احمد نے کہا انکاری پولیس اہلکاروں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے گی تاہم سابق صدر کی حیثیت سے زرداری ہاؤس کی منظور شدہ سیکیورٹی برقرار رہے گی۔ انہوں نے بتایا کہ شخصیات اور اداروں کے لیے اضافی یا غیر منظور شدہ پولیس اہلکاروں کو سیکیورٹی کے فرائض سے ہٹا دیا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ انتخابات کی تاریخ قریب آرہی ہے تاہم پولیس اہلکاروں کو نواب شاہ کے مختلف حصہ میں تعینات کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ جس کو سیکیورٹی درکار ہے وہ درخواست جمع کرانے کا پابند ہوگا تاہم درخواست پر حتمی فیصلہ ضلعی مانیٹرنگ کمیٹی اور متعلقہ ادارے میرٹ کی بنیاد پر لیں گے۔اس حوالے سے ذرائع نے بتایا کہ زرداری ہاؤس پر تعینات 36 پولیس اہلکاروں کو واپس بلالیا گیا۔


ای پیپر