قصور جنسی اسکینڈل میں وفاقی محتسب کے تہلکہ خیز انکشافات
09 جنوری 2019 (09:07) 2019-01-09

اسلام آباد: قصور میں بچوں سے زیادتی کے واقعات پر وفاقی محتسب کی رپورٹ میں تہلکہ خیز انکشافات سامنے آگئے۔ زیادتی کے واقعات میں مقامی سیاست دان، جاگیردار، وکلا اور پولیس سب ملوث ہیں۔

رپورٹ کے مطابق بچوں کے ساتھ زیادتی کے 272 واقعات رپورٹ ہوئے لیکن سزا صرف 5 مجرموں کو سنائی گئی، واقعے کے گواہوں کو تحفظ فراہم نہ کیا گیا جس وجہ سے مقدمات کمزور ہوئے اور مظلوم انصاف سے محروم رہ گئے۔

وفاقی محتسب کے مطابق جنسی زیادتی میں مقامی سیاستدان اور جاگیر دار مجرموں کی پشت پنائی کرتے رہے اور اپنا اثر و رسوخ استعمال کرکے ملزمان کو چھڑواتے رہے۔ پولیس کی جانب سے بھی بے حسی دکھائی گئی، اہلکار رشوت لے کر تفتیش کو دباتے رہے۔ عدالت جانے والے مقدمات میں وکلاء نے بھی شیطان کے چیلوں کا کردار ادا کیا۔

رپورٹ کے مطابق زیادتی کا شکار ہونے والے بچوں کے رشتہ دار کم تعلیم یافتہ یا ان پڑھ تھے۔ جس وجہ سے سیاستدان اور بااثر افراد ان پر دباؤ ڈال کر مقدمات واپس لینے کیلئے دباؤ ڈالتے رہے۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ سال معصوموں کے ساتھ ایسے سنگین جرائم کی شرح 16 اعشاریہ 2 فیصد بڑھ گئی۔


ای پیپر