Maulana Fazlur Rehman made a big announcement
09 دسمبر 2020 (17:47) 2020-12-09

اسلام آباد: مولانا فضل الرحمان، بلاول بھٹو، مریم نواز نے  میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئےکہا پی ڈی ایم کے اہم فیصلے ہو چکے ،13 دسمبر کو لاہور جلسہ ہر صورت ہوگا ،لاہور جلسہ بہت اہم ہے ۔

تفصیلات کے مطابق مولانا فضل الرحمن کی رہائش گاہ پر پی ڈی ایم رہنمائوں نے شرکت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا لاہور جلسے کو اگر روکنے کی کوشش کی گئی تو دوسرا راستہ بنائیں گے ،اگر دوسرا راستہ روکا گیا تو تیسراراستہ اپنائیں گے ،چہ مگوئیاں ہوتی رہتی ہیں، یہ تحریک کو تقویت پہنچا رہی ہیں،ابھی اسٹیرئنگ کمیٹی کا اجلاس ہو گا جس میں مزید اہم فیصلے کئے جائینگے ،استعفے کب دینے ہیں اس کا فیصلہ اگلے لائحہ عمل میں کریں گے۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا حکومت نے جلسہ روکنے کیلئے مینار پاکستان کو ڈیم میں تبدیل کر دیا ہے تاکہ جلسہ نہ ہو سکے ،جلسہ روکنے کیلئے حکومت مختلف حربے استعمال کر رہی ہے ،ایک طرف کہتے ہیں جلسہ نہیں روکنا دوسری طرف جلسہ روکنے کیلئے اوچھی حرکتیں کر رہے ہیں ،جمہوریت کی بقا اور آئین کے تحفظ کیلئے بات کرنا ہوگی ،استعفوں اور اسلام آباد مارچ کا شیڈول بھی طے کیا جائے گا،ان اسمبلیوں سے سینیٹ الیکشن ہوئے تو وہ جعلی ہوں گے۔

اس موقع پر بلاول بھٹو کا کہنا تھا پیپلز پارٹی نے ہر آمرانہ دور کا مقابلہ کیا ہے،عمران خان اور سلیکٹڈ حکومت کو گھر بھیجنے کیلئے باہر نکلے ہیں،پی ڈی ایم میں شامل 11 جماعتیں ایک پیج پر ہیں،ہم جلسے بھی کریں گے، سول سوسائٹی سے بھی رابطہ کریں اور احتجاج بھی کریں گے،حکومت کیخلاف تمام آئینی راستوں کو استعمال کریں گے،اعتزاز احسن سے متعلق بات کرنے والوں کو جواب دیتے ہوئے بلاول بھٹو نے کہا جو فیصلہ پیپلزپارٹی کا ہو گا وہی اعتزاز احسن کا ہوگا ۔

مریم نواز نے پی ڈی ایم کی طرف سے دئیے گئے عشائیہ کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا سب کا متفقہ فیصلہ ہے جو مولانا فضل الرحمان نے کیا ہے،پی ڈی ایم میں شامل تمام جماعتیں اپنے استعفے انہیں جمع کرائیں گی،مینار پاکستان میں  جلسہ لازمی ہوگا، اس کے متعلق کوئی دو رائے نہیں،مسلم لیگ (ن) کے سابق منصوبے چل رہے ہیں جس پر یہ تختی لگا رہے ہیں۔جلسے سے متعلق کوئی دو رائے نہیں ہے سب کا متفقہ فیصلہ ہے جلسہ مینارپاکستان میں ہی ہوگا ۔


ای پیپر