رانا ثنا اللہ کے جوڈیشل ریمانڈ میں 24اگست تک توسیع
09 اگست 2019 (14:50) 2019-08-09

لاہور:انسداد منشیات کی خصوصی عدالت نے مسلم لیگ (ن) پنجاب کے صدر رانا ثنا اللہ سمیت چھ ملزمان کے جوڈیشل ریمانڈ میں 24اگست تک توسیع کر دی، رانا ثنا اللہ کے داماد کو بھی احاطہ عدالت سے گرفتار کر لیا گیا ۔انسداد منشیات کی خصوصی عدالت کے جج مسعود ارشد نے کیس کی سماعت کی ۔ رانا ثنا اللہ اور ان کے پانچ ساتھیوں کو کیمپ جیل سے لا کر عدالت میں پیش کیا گیا ۔

دوران سماعت عدالت کی جانب سے رانا ثنااللہ کو چالان کی کاپیاں فراہم کی گئیں۔عدالت کا کہنا تھاکہ چالان میں اگر کوئی ڈاکو منٹس موجود نہ ہوا تو اگلی سماعت پر بتایا جائے۔ رانا ثنا اللہ کے وکیل نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ رانا ثنااللہ کی گاڑی میں 6لاکھ روپے بھی تھے وہ نہیں دیا گئے۔عدالت نے رانا ثنااللہ کی درخواست منظور کرتے ہوئے گاڑی میں موجود تمام اشیا ء واپس کرنے کا حکم دے دیا۔بعد ازاں انسداد منشیات کی خصوصی عدالت نے رانا ثنا اللہ کے جوڈیشل ریمانڈ میں توسیع کرتے ہوئے کیس کی سماعت 24 اگست تک ملتوی کردی۔عدالت نے اے این ایف حکام کو آئندہ سماعت پر سی سی ٹی وی فوٹیج پیش کرنے اوردیگر ملزمان اکرم،عمرفاروق،عامر رستم،عثمان احمد اورسبطین خان کو بھی وکیل کرنے کا حکم دیدیا۔

ایلیٹ فورس نے رانا ثنا اللہ کے داماد شہریار رانا کو بھی احاطہ عدالت سے گرفتار کر لیا گیا ۔ شہریا ر رانا اپنے سسر رانا ثنا اللہ کی پیشی کے موقع پر اظہار یکجہتی کیلئے عدالت میں موجود تھے کہ ایلیٹ فورس کے اہلکاروں نے انہیں حراست میں لے لیا اور گاڑی میں بٹھا کر لے گئے ۔ اس موقع پر کچھ وکلاء اور لیگی کارکنوں نے مزاحمت کی کوشش بھی کی لیکن ایلیٹ فورس کے اہلکار وں نے انہیں زبردستی پیچھے ہٹا دیا ۔ پولیس کے مطابق شہر یار کے خلاف فیصل آباد میں بغیر اجازت نکالی گئی ریلی کا مقدمہ درج ہے اور انہوں نے ضمانت نہیں کرائی تھی ۔


ای پیپر