فوٹوبشکریہ فیس بک

سپریم کورٹ نے میڈیا لاجک کو ٹی وی چینلز کی ریٹنگ جاری کرنے سے روکدیا
09 اگست 2018 (14:22) 2018-08-09

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے چینل ریٹنگ فراہم کرنے والے ادارے میڈیا لاجک کی تمام سرگرمیاں معطل کردیں۔ میڈیا لاجک کو ٹی وی چینلز کی ریٹنگ جاری کرنے سے روک دیا گیا۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ میڈیا لاجک کے علاوہ دیگر کمپنیوں سے ریٹنگ کرائی جائے ۔ میڈیا لاجک کے سی ای او سلمان دانش کو عدالتی حکم عدولی پر توہین عدالت کا نوٹس جاری کر دیا گیا۔

سپریم کورٹ نے سلمان دانش کو آئندہ سماعت پر طلب کر لیا ۔ سپریم کورٹ میں ریٹنگ سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران جسٹس اعجاز الااحسن نے ریمارکس دیئے کہ میڈیا لاجک نے ریٹنگ کے لئے اجارہ داری قائم کر رکھی ہے۔ چیئرمین پیمرا نے عدالت کو بتایا کہ پی بی اے اور میڈیا لاجک کے معاہدے میں لکھا ہوا ہے جو ممبر نہیں ہو گا اسے ریٹنگ نہیں دی جائے گی۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا جو پی بی اے کا ممبر نہیں بننا چاہتا کیا اس کو جینے کا حق نہیں ہے؟ دوسرے کا کاروبار روکنے کا کسی کو اختیار نہیں۔ بعد ازاں عدالت نے سماعت غیر معینہ مدت تک کے لئے ملتوی کر دی گئی۔

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 


ای پیپر