Prime Minister Imran Khan's statement on Obscenity, full support of religious and political parties
کیپشن:   فائل فوٹو
09 اپریل 2021 (09:49) 2021-04-09

لاہور: ملک کی سرکردہ سیاسی اور مذہبی جماعتوں نے وزیراعظم عمران خان کے فحاشی اور بے پردگی سے متعلق بیان کی مکمل تائید کرتے ہوئے جنسی زیادتی کے بڑھتے واقعات کو اس کی بڑی وجہ قرار دیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق سیاسی رہنماؤں اور مذہبی قائدین کی جانب سے وزیراعظم کے بیان کی مکمل حمایت کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہوں نے معاشرے کے جس اہم مسئلے کی نشاندہی کی تھی وہ بڑے واضح ہیں، ان میں کوئی دو رائے نہیں ہے۔

اس معاملے پر جاری ایک مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ اس بات میں کسی شک و شبے کی کوئی گنجائش نہیں ہے کہ میڈیا کے ذریعے جو مواد دکھایا جاتا ہے اس سے معاشرے میں عریانی اور فحاشی کو فروغ ملتا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ میڈیا میں دکھائی جانے والی یہی فحاشی اور عریانی معاشرے میں بڑھتے ہوئے ریپ کے بڑھتے واقعات کا سبب ہیں۔ وزیراعظم عمران خان کے بیان میں اسی پر بات کی گئی تھی، ان کے موقف کی جمعہ کے اجتماعات میں مکمل تائید وتوصیف کی جائے گی۔

مذہبی اور سیاسی قائدین کے مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے کبھی خواتین کو عریانی اور فحاشی کا ذمہ دار نہیں کہا۔ بے راہ روی پھیلانے میں اگر کسی مرد کا قصور ہو یا عورت کا، دونوں ہی صورتوں میں قابل مذمت ہے۔

بیان میں قران پاک کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ اس میں واضح طور پر مردوں کو اپنی نگاہیں نیچی رکھنے جبکہ عورتوں کو پردے کی تاکید کی گئی ہے۔ تاہم وزیراعظم عمران خان کے بیان کو ایک خاص طبقے نے اس کے سیاق وسباق سے ہٹ کر تنقید کا نشانہ بنایا جو سخت قابل مذمت ہے۔

یہ مختلف مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے علمائے کرام جن میں حافظ محمد طاہر محمود اشرفی، مولانا محمد شفیع قاسمی اور مولانا اسعد زکریا قاسمی سمیت دیگر کی جانب سے جاری کیا گیا ہے۔


ای پیپر