امیر ترین افراد جلد ہی دنیا کی دو تہائی دولت کے مالک بن جائینگے
09 اپریل 2018 (14:52) 2018-04-09


لند ن : دنیا کے امیر ترین افراد جلد ہی اس دنیا کی دو تہائی دولت کے مالک بن جائیں گے۔ اس وقت امیر اور غریب افراد کے درمیان فرق اور عدم مساوات اپنے ’عروج‘ پر ہیں۔


برطانوی اخبار کی ایک رپورٹ کے مطابق سن 2030ء تک اس دنیا کی دو تہائی دولت اس دنیا میں موجود صرف ایک فیصد امیر ترین افراد کی تجوریوں میں چلی جائی گی۔ اس حیران کن رپورٹ کے بعد فوری اقدامات اٹھانے اور توازن قائم کرنے کے مطالبات سامنے آئے ہیں۔ تجزیہ کاروں نے عالمی رہنماؤں کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس طرح دولت کے صرف چند ہاتھوں میں محدود ہونے سے آئندہ عشروں کے دوران غریب افراد میں غصہ اور بداعتمادی بڑھ جائیں گے۔


سن دو ہزار آٹھ کے معاشی بحران کے بعد سے شروع ہونے والا یہ رجحان اگر اسی طرح جاری رہا تو بارہ برس تک دنیا کے ایک فیصد امیر ترین افراد کے پاس اس دنیا کا 64 فیصد سرمایہ جمع ہو جائے گا۔ تحقیق کے مطابق اگر معاشی بحران کو بھی شامل کر لیا جائے تو تب بھی ان ایک فیصد افراد کے پاس دنیا کی نصف سے زائد دولت جمع ہے۔اس رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ سن دو ہزار آٹھ کے بعد سے ان امیر ترین افراد کی دولت میں سالانہ چھ فیصد اضافہ ہو رہا ہے جبکہ دنیا کے باقی 99 فیصد افراد کی دولت میں اوسطا اضافے کی شرح تین فیصد ہے۔ اگر رجحان اسی طرح جاری رہا تو بارہ برس بعد امیر ترین ایک فیصد افراد کے پاس 305 ٹریلین ڈالر کے برابر دولت جمع ہو گی جبکہ اس وقت ان ایک فیصد افراد کے پاس 140 ٹریلین کے برابر سرمایہ موجود ہے۔


ای پیپر