NCOC,wedding,rules,food on table,ceremonies,marriage
08 نومبر 2020 (21:21) 2020-11-08

اسلام آباد: این سی او سی نے عالمی وبا کیلئے نئی پابندیوں عائد کرنے کے بعد اب ان کی وضاحت کرتے ہوئے بتا دیا ہے کہ تفصیلاً شادی کی تقریبات کی اجازت کس صورت میں ہو گی اور وہ کیا  اصول ہیں جن کی پابندی لازمی کرنا ہو گی۔

 تفصیلات کے مطابق  عالمی وبا  کے دوران شادی کی تقریبات کے لیے گائیڈ لائنز جاری کردی گئیں۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر نے ہدایات کے مطابق پابندیاں کا نفاذ 20 نومبر سے بڑے شہروں میں ہو گا۔ پنجاب کے شہروں میں اسلام آباد ٗ راولپنڈی ٗ لاہور ٗ ملتان ٗ گجرات ٗ گوجرانوالہ ٗ فیصل آباد شامل ہیں جبکہ دیگر شہروں میں کراچی اور حیدر آباد کے علاوہ گلگت ٗ مظفر آباد ٗ سوات اور پشاور شامل ہیں۔ تقریب کا انعقاد اور جگہ کا انتخاب لوکل ہیلتھ اتھارٹی کی مشاورت سے ہوگا، شادی کی ان ڈور تقریب پر پابندی عائد کردی گئی ہے صرف آٹ ڈور کی اجازت ہوگی۔ 

مارکیزمیں شادی کی تقریب کے انعقاد کی اجازت نہیں ہوگی، شادی کی آٹ ڈور تقرہب میں کنوپی ٹینٹ کا استعمال بھی ممنوع ہوگا۔ آٹ ڈور شادی کی تقریب میں ایک ہزار مہمان شرکت کرسکیں گے۔ شادی کی تقریب میں شرکا کے درمیان 6 فٹ کا فاصلہ رکھنا ہوگا، تقریب کا میزبان ایس او پیز پر عمل کا ذمے دار ہوگا۔شادی کی تقریبا کو ہر صورت 2 گھنٹے میں ختم کرنا ہو گا اور رات دس بجے کے بعد کسی تقریب کی اجازت نہیں ہو گی۔

تقریب کے ہر مہمان کے لیے ماسک پہننا لازم ہوگا، ہر مہمان کو ماسک اور سینی ٹائزر فراہم کرنا میزبان کی ذمہ داری ہوگی۔ شادی کی تقریب میں کاغذ والا تولیہ اور جراثیم کش دوائیں استعمال کرنا ہوں گی۔ تقریب میں شریک ہر فرد کا بخار چیک کرنا لازم ہوگا۔ تقریب میں بوفے ڈنر یا لنچ کی اجازت نہیں ہوگی، صرف لنچ باکس یا ٹیبل سروس کی اجازت ہوگی۔ ولیمے کی تقریب میں مہمانوں کے لیے فوڈ باکسز کا استعمال کیا جائے گا۔ 


ای پیپر