بلاو ل بھٹو کا وزیر اعظم عمران خان سے متعلق اہم انکشاف
08 May 2019 (17:08) 2019-05-08

اسلام آباد:پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ سندھ وہ واحد صوبہ ہے جہاں ہم ٹیکس کا ہدف حاصل کرتے ہیں، ٹیکس وصولی کا ہدف صرف اٹھارویں ترمیم کی وجہ سے پورا ہوتا ہے،حکومت اپنی ناکامی چھپانے کے بجائے سندھ سے سیکھے، وزیر اعظم گورنر اسٹیٹ بینک کو لگانے سے پہلے باقر رضا سے ملے ہی نہیں، آئی ایم ایف کے سامنے جا کر وزیر اعظم نے خود مختاری پر سمجھوتہ کیا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے قومی اسمبلی کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم گورنر اسٹیٹ بینک کو لگانے سے پہلے باقر رضا سے ملے ہی نہیں، آئی ایم ایف کے سامنے جا کر وزیر اعظم نے خود مختاری پر سمجھوتہ کیا۔بلاول کا کہنا تھا کہ اگر ہم طریقہ کار نہیں دیکھیں گے تو کسی کی کارکردگی کا کیسے پتہ چلے گا، کیا آئی ایم ایف فیصلہ کرے گا کہ گورنر اسٹیٹ بینک کون ہوگا۔ حکومت غریب کی مدد کے لیے کوئی قدم نہیں اٹھا رہی۔ ٹیکس اہداف کی وصولی میں حکومت بدترین کارکردگی دکھا رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پوری ٹیکس وصولی نہ ہونے سے صوبوں کو نقصان ہو رہا ہے، سندھ وہ واحد صوبہ ہے جہاں ہم ٹیکس کا ہدف حاصل کرتے ہیں۔ ٹیکس وصولی کا ہدف صرف اٹھارویں ترمیم کی وجہ سے پورا ہوتا ہے۔ حکومت اپنی ناکامی چھپانے کے بجائے سندھ سے سیکھے۔بلاول کا کہنا تھا کہ ہماری ٹیکس وصولی وفاقی حکومت سے بہتر ہوگی، وفاقی ٹیکس کلیکشن سندھ کو دیں 100 فیصد ٹیکس جمع کر کے دیں گے۔ ہم نے بھی آئی ایم ایف سے معاہدہ کیا لیکن معیشت کو گروی نہیں رکھا، آئی ایم ایف سے معاہدے میں عوام کو نقصان نہیں پہنچنے دیا۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے تنخواہیں بڑھائیں، روزگار دیا۔ ہم نے سب سے زیادہ 68 لاکھ نوکریاں فراہم کیں۔ ہمیں مجبور کریں گے تو پارلیمان کے باہر احتجاج کریں گے۔ مزدوروں کی آواز نہیں سنی جارہی۔ ہر ادارے میں یونینز کے خلاف سازش چل رہی ہے۔بلاول کا مزید کہنا تھا کہ ن لیگ سے چیئرمین پی اے سی تبدیل کرنے پر بات نہیں ہوسکی، تبدیلی پر فیصلہ ن لیگ کا آخری فیصلہ نہیں ہے۔ ن لیگ کو مشورہ دوں گا ایسی کوئی بات ہے بھی تو فیصلے پر نظر ثانی کریں۔


ای پیپر