اعتماد کا ووٹ لیتے وقت ایوان میں کتنی حاضری تھی، رپورٹ جاری
سورس:   فائل فوٹو
08 مارچ 2021 (20:18) 2021-03-08

اسلام آباد: چھ مارچ کو وزیراعظم عمران خان کے اعتماد کا ووٹ لینے کے وقت قومی اسمبلی میں کتنی حاضری تھی؟ اس حوالے سے رپورٹ جاری کردی گئی۔

قومی اسمبلی سیکرٹریٹ کی جانب سے ایوان میں چھ مارچ کو ارکان کی حاضری کی رپورٹ جاری کی گئی ہے۔ قومی اسمبلی سیکرٹریٹ کے مطابق 6 مارچ کو ایوان میں 181 ارکان موجود تھے۔

رپورٹ کے مطابق ایوان میں اسپیکر قومی اسمبلی سمیت حکومت کے 179 ارکان تھے جب کہ اس وقت اپوزیشن کے مولانا اکبر چترالی اور محسن داوڑ بھی موجود تھے۔

اس سے قبل اعتماد کے ووٹ کے نتائج پر بلاول بھٹو کی طرف سے تحفظات اور پولنگ کے عمل کی تحقیقات کے مطالبے پر ردعمل دیتے ہوئے اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا کہ پولنگ کے عمل کو پوری دنیا اور میڈیا نے دیکھا ،بلاول ایک ایم این اے کے بارے میں بتائیں جو کم یا غیر حاضر تھا،  میں کبھی ایسا کام نہیں کرتا جس سے تاریخ خراب ہو ، میں نے کبھی غیر آئینی کام کیا اور نہ ہی کبھی کسی بھی صورت قانون و آئیں کے خلاف کام نہیں کروں گا۔

اسد قیصر نے کہا صادق سنجرانی نے تین سال سینٹ کو مثالی طور پر چلایا اور اپنے دور میں اپوزیشن کو برابر کا موقع دیا، چیئر مین سینٹ کے اپوزیشن و حکومتی سنیٹروں کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں، امید ہے سب کے چوائس صادق سنجرانی ہی ہوں گے۔

خیال رہے کہ 6 مارچ کو قومی اسمبلی کے اجلاس میں وزیراعظم عمران خان نے ایوان سے 178 ووٹ حاصل کیے جب کہ وزیراعظم منتخب ہونے پر انہیں 176 ووٹ ملے تھے اس طرح انہوں نے پہلے کے مقابلے میں 2 اضافی ووٹ لیے۔ اپوزیشن نے قومی اسمبلی کے اجلاس سے بائیکاٹ کیا تھا جس کے باعث اپوزیشن کی بینچیں خالی رہی تھیں۔

بشکریہ(نیو نیوز)


ای پیپر