Controversial, agricultural laws, issue, preparations, parliamentary, siege
08 مارچ 2021 (13:08) 2021-03-08

نیو دہلی: بھارت میں متنازع زرعی قوانین کا معاملہ شدت اختیار کر گیا ، قوانین کے خلاف احتجاج کرنے والے کسانوں نے پارلیمنٹ کے گھیراؤ کی تیاریاں مکمل کرلیں ۔

زرعی قوانین کے خلاف ڈٹے کسانوں نے مودی حکومت کو ہلا کر رکھ دینے کا فیصلہ کرلیا ، بجٹ سیشن کے دوران پارلیمنٹ کے گھیراؤ کی حکمت عملی تیاری کرلی ۔

گزشتہ روز کاشتکاروں نے دہلی جانے والی اہم شاہراہیں بلاک کر کے احتجاج کرتے ہوئے ہریانہ ، پنجاب اور راجستھان کی شاہراہیں بلاک کر دیں ، مظاہرے میں شریک خواتین سیاہ ملبوسات پہن کر ریلی میں شریک ہوئیں ۔

واضح رہے کہ بھارتیہ کسان یونین نے احتجاج جاری رکھنے کیلئے کسانوں سے اپیل کی تھی کہ فی گاؤں دس روز کے لیے ایک ٹریکٹر اور پندرہ افراد کی فراہمی کا فارمولا اختیار کرے ۔

اس فارمولے کے تحت ہر گاؤں سے پندرہ افراد کو دس روز کیلئے دھرنے کے مقام پر قیام کرنا ہوگا اور آئندہ دس روز کیلئے مزید پندرہ افراد ان کے متبادل ہونگے ۔ اس حکمت عملی سے کسانوں کو طویل عرصہ تک اپنا احتجاج جاری رکھنے میں مدد ملے گی ۔

خیال رہے کہ بھارتی کسان گزشتہ سال نومبر سے متنازعہ زرعی قوانین کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں ۔ موسم کی سختی ، ٹریفک حادثات اور خودکشی کے سبب 248 کسان ہلاک ہوچکے ہیں ۔


ای پیپر