فوٹو بشکریہ فیس بک

نیشنل ایکشن پلان پر مستقل عمل در آمد ہونا پاکستان کے مفاد میں ہے: بلاول بھٹو
08 مارچ 2019 (10:24) 2019-03-08

اسلام آباد: چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ نیشنل ایکشن پلان پر مستقل عمل در آمد ہونا پاکستان کے مفاد میں ہے، موجودہ حکومت کو اس معاملے میں اپنی سنجیدگی ظاہر کرنا ہوگی۔

بی بی سی کو انٹرویو دیتے ہوئے بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ نیشنل ایکشن پلان پر بروقت عمل درآمد کیا گیا ہوتا تو آج دنیا میں پاکستان کی پوزیشن کچھ اور ہوتی، کہتے ہیں خواہش ہے اس بار نیشنل ایکشن پلان پر مسلسل عمل ہو۔ معاملے کی نگرانی کیلئے قومی سلامتی کی پارلیمانی کمیٹی کو فوری طور پر فعال کرنا چاہیے۔

احتساب کی بات کرتے ہوئے بولے، کرپشن کا ذکر آئے تو انگلیاں پیپلز پارٹی، سندھ حکومت اور آصف علی زرداری پر اٹھنے لگتی ہیں۔ بہتر ہوتا اگر ایک ہی بار احتساب ہوتا اور دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جاتا۔ کرپشن کے خلاف کارروائی میں کسی کو ٹارگٹ کیا جانا ٹھیک نہیں، پیپلزپارٹی کے خلاف ہمیشہ سازشیں کی جاتی رہیں۔ نیب کو صرف انتقام کیلئے بنایا گیا، ہماری جماعت نے ایوب خان سے لے کر ضیا الحق تک یہی سنا کہ پہلے احتساب پھر انتخاب۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف نے کالعدم جماعتوں کے تعاون سے الیکشن لڑا تھا، حکومت کو اپنی سنجیدگی ثابت کرنے کیلئے ایسے وزیروں کو باہر کرنا ہوگا، جو ان جماعتوں کی حمایت کرتے ہیں۔

افسوس ہے بھارت کا وزیر اعظم مودی دہشتگردی کو سیاست کیلئے استعمال کر رہا ہے۔ پاکستان میں انسانی اور جمہوری حقوق کا بحران ہے، کسی بھی جمہوریت میں ادارے اس طرح کام نہیں کرتے، ایسا نہیں ہو سکتا کہ سپریم کورٹ ڈیم بنائے، اس کا کام انصاف فراہم کرنا ہے۔


ای پیپر