نو منتخب سینیٹر چوہدری سرور دوہری شہریت کیس کے سلسلے میں سپریم کورٹ پیش
08 مارچ 2018 (15:20) 2018-03-08

لاہور:سینیٹ الیکشن سے قبل کا شور شرابا اور بعد میں دوہری شہریت کے حوالے سے نیا پنڈورا باکس کھل گیا ۔ دوہری شہریت کے حوالے سے کئی اراکین اسمبلی کو اپنا جواب دینے کیلئے سپریم کورٹ نے از خود نو ٹس لے لیا ۔ کیس کی سماعت کے موقع پر تحریک انصاف کے پنجاب سے منتخب ہونے والے چوہدری سرور سپریم کورٹ میں پیش ہو ئے جہاں انہوں نے اپنی دوہری شہریت کے حوالے پردہ اُٹھا دیا ۔

دہری شہریت سے متعلق از خود نوٹس کیس میں سپریم کورٹ نے تحریک انصاف کے رہنما چوہدری سرور کو بیان حلفی جمع کرانے کی ہدایت کی ہے۔ سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے دہری شہریت سے متعلق ازخود نوٹس کی سماعت کی۔اس موقع پر تحریک انصاف کے نومنتخب سینیٹر چوہدری سرور پیش ہوئے اور عدالت کو بتایا کہ سپریم کورٹ کے روبرو دہری شہریت کے معاملے پر آج پیش ہوا اور معزز عدالت کو بتانا چاہتا ہوں کہ مئی 2013 میں دہری شہریت ختم کردی تھی اور اب ہمیشہ کے لیے پاکستانی شہری ہوں۔

چوہدری سرور نے کہا کہ عدالت میں بیان حلفی جمع کراو¿ں گا جس پر چیف جسٹس نے انہیں ہدایت دی کہ آپ اپنا بیان حلفی عدالت میں جمع کرائیں۔سماعت کے دوران تحریک انصاف کی رہنما عندلیب عباسی نے کہا کہ ہمارے حقوق سلب کیے جارہے ہیں جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ آپ کے حقوق کے تحفظ کے لیے بیٹھے ہیں اسی لیے از خود نوٹس لیا۔عدالت نے ماہر قانون خالد خان اور بلال منٹو کو دہری شہریت ازخود نوٹس کیس میں عدالتی معاون مقرر کرتے ہوئے سماعت 10 مارچ تک کے لئے ملتوی کردی۔


ای پیپر