سندھ اسمبلی کا ایوان مچھلی منڈی بن گیا
08 مارچ 2018 (15:18)


کراچی: سندھ اسمبلی کا ایوان مچھلی بازار بن گیا ،ایم کیو ایم رکن اسمبلی اور ڈپٹی اسپیکر شہلارضا ایک دوسرے کو دھمکیاں دیتے رہے ، ڈپٹی اسپیکر نے متحد ہ کے رکن محمد حسین کو ایوان سے باہر نکلوا دیا۔


تفصیلات کے مطابق سندھ اسمبلی کے دوران ایم کیو ایم رکن سندھ اسمبلی محفوظ یار خان اور محمد حسین کی ڈپٹی اسپیکر سندھ اسمبلی شہلارضا سے تلخ کلامی ہوئی ہے ،اس دوران نوبت دھمکیوں تک پہنچ گئی اور محفوظ یار خان اجلاس سے واک آؤٹ کرگئے ، اجلاس کے دوران سوال و جواب کے سیشن میں محفوظ یار خان اور ڈپٹی اسپیکر شہلارضاکے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا،جس پر ڈپٹی اسپیکر شہلارضا نے کہا کہ انہوں نے گزشتہ اجلاس میں کہا تھا کہ بھونکنے کی آوازیں آرہی ہیں ،وہ بالکل درست کہا تھا،آپ لوگ دعا کے دوران تماشہ کرتے ہیں ،بولنے کی اجازت نہ دینے اور مائیک بند ہونے پر محفوظ یار خان اجلاس سے واک آؤٹ کرگئے ،جبکہ ایم کیو ایم کے رکن اسمبلی محمد حسین نے ڈپٹی اسپیکر کو دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ میں آپ کو جانتا ہوں ، آپ کا بیک گراؤنڈ کیا ہے ،جس پر دپٹی اسپیکر شہلا رضا نے جواب دیا کہ میں بھی آپ کو جانتی ہوں ،کون کیا ہے اور کس کے گھر والے کہا ں رہتے ہیں ،میں آپ کو دیکھ لوں گی۔محمد حسین نے جواب دیا کہ آپ مجھے نہیں جانتیں ،میں چاہوں تو یہ ایوان بند کراسکتا ہوں ،جس پر ڈپٹی اسپیکر کا کہنا تھا کہ اس ایوان کی آواز ضیاء الحق اور مشرف نہیں بند کراسکے ،آپ کیا کرائیں گے۔


اس پر محمد حسین نے جواب دیا کہ میں آپ کو دیکھ لوں گا۔ڈپٹی اسپیکر شہلارضا نے کہا کہ میں آپ کا حال بھی جانتی ہوں اور یہ بھی جانتی ہوں کہ آگے آپ کے ساتھ کیا ہونے والا ہے ،محمد حسین مائیک بند ہونے کے باوجود بولتے رہے ،جس پر ڈپٹی اسپیکر سندھ اسمبلی نے سارجنٹ کو کہہ کر انہیں ایوان سے باہر نکلوا دیا،اس موقع پر اپوزیشن لیڈر خواجہ اظہار الحسن اپنے ارکان کے رویے کی صفائیاں دیتے رہ گئے ،مگر ڈپٹی اسپیکر شہلا رضا نے ایک نہ سنی ،ان کا کہنا تھا کہ جب ایم کیو ایم کے ارکان سب کے سامنے زاتی حملے کررہے تھے تو آپ دیکھتے رہے انہیں نہیں روکا،شہلا رضا نے کہا کہ میں ایک ایک کو اچھی طرح سے جانتی ہوں ،میرا بیک گراؤنڈ کیا ہے میں ابھی بتاسکتی ہوں مگر یہ سوال جواب کا سیشن ہے ،اس میں صرف سوال کئے جائیں ۔


ای پیپر