Rescue operation has been completed after the train accident, Railway spokesman said
کیپشن:   فائل فوٹو
08 جون 2021 (10:27) 2021-06-08

اسلام آباد: ترجمان ریلوے کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ٹرین حادثے کے بعد ریسکیو آپریشن کا کام مکمل کر لیا گیا ہے، ٹریک سے بوگیوں کو ہٹا دیا گیا ہے اور اب ٹریک کوٹھیک کیا جارہا ہے ۔

ترجمان ریلوے نے بتایا کہ جیسے ہی ٹریک کا کام مکمل ہو جائے گا تو ٹرینوں کی روانگی شروع ہو جائے گی ۔ترجمان نے کہا کہ پاکستان ریلوے اپنے مسافروں سے معذرت خواہ ہے کہ انہیں حادثے کے باعث پریشانی اٹھانا پڑی ہے۔

دوسری جانب وزیر ریلوے محمد اعظم خان سواتی، چیئرمین ریلوے حبیب الرحمن گیلانی اور سی ای او ریلوے نثار احمد میمن ساری رات ریلیف آپریشن کی نگرانی کرتے رہے۔

ریلوے ترجمان کے مطابق ریلوے انتظامیہ اور تمام افسران بھی اس ریلیف آپریشن کی تکمیل تک ڈیوٹی پر موجود رہے۔

ریسکیو آپریشن کا کام مکمل ہو چکا ہے۔ ٹرین حادثے میں جاں بحق اور زخمی ہونے والے افراد کی حتمی تعداد اکٹھی کر کے جاری کی جائےگی۔

ڈہرکی ٹرین حادثہ کے مقام پر پاک فوج اور رینجرز کے دستے امدادی سرگرمیوں میں مصروف رہے۔ زخمیوں کو قریبی ہسپتالوں میں منتقل کر دیا گیا ہے۔ ‏آرمی انجینئرز کی خصوصی ٹیم نے بھی ریلیف آپریشن میں حصہ لیا۔

ریسکیو آپریشن میں پاک فوج کے ہیلی کاپٹرزنے بھی حصہ لیا جس کے ذریعے امدادی سامان جائے حادثہ پر پہنچایا گیا۔ آئی ایس پی آر نے کہا کہ پاک فوج اور رینجرز کے دستے ریسکیو آپریشن میں شریک تھے جبکہ پاک فوج کے ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل اسٹاف کو بھی موقع پر پہنچا دیا گیا تھا۔‏

آرمی انجینئرز کے وسائل بھی بروئےکار لائے گئے۔ انجینئرز کی خصوصی ٹیم راولپنڈی سے پہنچی۔ رحیم یار خان سے ریسکیو 1122 کی ٹیم امدادی کارروائیوں میں حصہ لیا۔

بوگیوں سے مسافروں کو نکالنے کے لئے بوگیاں کاٹی گئیں۔ بیشتر زخمیوں کو رحیم یار خان، گھوٹکی اور میر پور ماتھیلو کے ہسپتالوں میں منتقل کیا گیا جبکہ شدید زخمیوں کو ہیلی کاپٹر کے ذریعے پنوں عاقل منتقل کیا گیا۔


ای پیپر