Lodhi Road Mosque Anti-Demolition Plea: Delhi High Court Directs Govt. To Fill Vacancies In Waqf Tribunal Expeditiously
08 اپریل 2021 (18:23) 2021-04-08

نئی دہلی :بابری مسجد کے بعد فاشسٹ مودی حکومت لال مسجد کے پیچھے پڑگئی ہے،دہلی پولیس نے لال مسجد کے امام کو دھمکی دیدی کہ وہ مسجد خالی کر دیں کیونکہ اسے منہدم کیا جا رہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بابری مسجد شہید کرنے کےبعد انتہاپسند مودی سرکار کے غنڈے لال مسجد کے پیچھے پڑ گئے ،دہلی پولیس روایتی بدمعاشی دکھاتے ہوئے لال مسجد کے امام کو دھمکی دے دی کہ وہ مسجد خالی کر دیں کیونکہ اسے منہدم کیا جا رہا ہے ،وقف بورڈ نے لال مسجد کو منہدم کرنے کے خلاف عدالت سے رجوع کر لیا ،دہلی وقف بورڈ کا کہنا ہے کہ یہ تاریخی مسجد صدیوں پرانی ہے جسے دہلی کے مسلم حکمرانوں نے تعمیر کیا تھا ،

دہلی وقف بورڈ کا کہنا ہے کہ یہ تاریخی مسجد صدیوں پرانی ہے جسے دہلی کے مسلم حکمرانوں نے تعمیر کیا تھا ،دہلی وقف بورڈ کا  یہ بھی کہنا  کہ 1970 کی حکومتی دستاویزات میں بھی یہ پورا علاقہ مسلم قبرستان اور لال مسجد کے نام سے درج ہے۔

واضح رہے اس سے قبل مودی کی حکومت نے 2017 میں اس بڑے تاریخی مسلم قبرستان کو  اپنے قبضے ميں لے کر اس پوری اراضی کو سینٹرل ریزرو پولیس فورسز کے حوالے کر دیا تھا،اس کا مقصد یہاں بھارتی فورسز کے لیے نئی بیرکیں اور ان کے دفاتر تعمیر کرنا تھا۔

دہلی وقف بورڈ کا کہنا تھا بھارتی حکومت نے سی آر پی ایف کی رہائش کے لیے عمارت تعمیر کرنے کے مقصد سے زمین لیتے وقت قبرستان اور مسجد کو تحفظ فراہم کر نے کا وعدہ کیا تھا،دوسری طرف دہلی ہائی کورٹ کی جانب سے وضاحت طلب کرنے پر مودی سرکار نے عدالت کو 29 اپریل تک کوئی کارروائی نہ کرنے کی یقین دہانی کروا دی ہے۔ 


ای پیپر