کرونا وائرس :اپریل کے آخر میں کیا ہو سکتا ہے ؟وزیر اعظم عمران خان نے آگاہ کر دیا
08 اپریل 2020 (18:40) 2020-04-08

اسلام آباد :وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھاکہ پاکستان میں لوگ یہ سمجھ رہے ہیں یہ بیماری ان کا کچھ نہیں بگاڑ سکتی ،اس بیماری کو انتہائی سنجیدگی سے لینا پڑے گا ،اگر قوم نے ذمہ دار ی سے کام نہ لیا تو بڑا نقصان اُٹھانا پڑ سکتا ہے ۔

وزیراعظم پاکستان عمران خان نے کہا ہے کہ اب تک ساڑھے تین کروڑ افراد نے ایس ایم ایس کے ذریعے احساس پروگرام میں اپلائی کیا ہے جنہیں ویری فکیشن کے بعد رقم دی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ حکومت نے کورونا وائرس کے باعث متاثر ہونے والے غریب ترین طبقے کیلئے احساس پروگرام شروع کیا جس میں اب تک ساڑھے تین کروڑ افراد نے ایس ایم ایس کے ذریعے اپلائی کیا ہے۔ یہ تمام ڈیٹا ہر طرح کی سیاسی مداخلت سے پاک اور کمپیوٹرائزڈ ہے جن کے بارے میں ہمیں معلوم ہے کہ ان کے حالات کیا ہیں اور ان سب کی ویری فکیشن کے بعد ہی رقم دی جائے گی۔

وزیر اعظم عمران خان نے بڑے خطرے سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ اپریل کے آخر تک پاکستان میں کورونا متاثرین کی تعداد بڑھ سکتی ہے، جس طرح سےکورونا بڑھتا جارہا ہے،اسپتال میں لوگوں کی تعدادبڑھ جائے گی۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ تین ہفتے لاک ڈاؤن کا فیصلہ کیا تھا،لاک ڈاؤن کے پیش نظراسکول،فیکٹریاں اوردکانیں بند کیں، اصل لاک ڈاؤن ہم نےشہروں میں کیا ہے،ہم نے 22 کروڑ لوگوں کوکھاناپینافراہم کرنا ہے، اس لیے ہم نےفیصلہ کیا ہے کہ زرعی شعبےکو مکمل طورپر کام کرنے دینا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کل سے اس پروگرام کے تحت رقم کی تقسیم شروع ہو جائے گی اور پورے پاکستان میں 17 مختلف پوائنٹس کے ذریعے ایک کروڑ 20 لاکھ خاندانوں کو یہ رقم دی جائے گی اور دو سے ڈھائی ہفتوں میں پورا عمل مکمل ہو جائے گا جس دوران 144 ارب روپے تقسیم کئے جائیں گے۔


ای پیپر