Source : Yahoo

شرجیل میمن بُری طرح پھنس گئے ۔۔۔شراب تھی یا شہد ؟
07 ستمبر 2018 (23:02) 2018-09-07

کراچی:سابق صوبائی وزیر شرجیل میمن کا معمہ ابھی حل نہیں ہوا ،رپورٹ کے مطابق اب شرجیل میمن کے خون کے نمونے حاصل کر لیے گئے ہیں جنہیں ٹیسٹ کرکے پرانے خون کے نمونے سے میچ کیا جائے گا جس سے دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا ۔

ذرائع کے مطابق شرجیل میمن کے خون کے نمونے حاصل کرلیے گئے ہیں جنہیں کراس چیک کے لیے آغا خان ہسپتال بھجوا دیا گیا ہے، شرجیل میمن کے خون کا دوبارہ ٹیسٹ ہوگا اور پرانے نمونوں سے کراس چیک کرایا جائے گا۔

ذرائع نے بتایا کہ ڈی این اے کے نمونے دو لیبارٹریز کو بھیجے گئے ہیں، ڈی این اے کا ایک نمونہ پنجاب فرانزک سائنس ایجنسی بھیجا گیا ہے جب کہ دوسرا نمونہ مقامی سطح پر ٹیسٹ کے لیے بھیجا گیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق شرجیل میمن کے خون کا ایک نمونہ پنجاب فرانزک لیبارٹری اس لیے بھیجا گیا ہے تاکہ اس کیس کی شفافیت کو جانچا جاسکے اور اس بات کا حتمی یقین کیا جاسکے کہ آغا خان ہسپتال میں جس خون کے نمونے میں شراب کی مقدار نہیں پائی گئی تھی وہ نمونہ شرجیل میمن کا تھا یا نہیں۔

یا د رہے کہ کراچی میں سابق صوبائی وزیر شرجیل انعام میمن کے خون کے تجزیے میں الکوحل کے شواہد نہیں ملے ہیں جبکہ ان کے کمرے سے برآمد ہونے والی دونوں بوتلوں کی کیمیائی تجزیے کی رپورٹ بھی سامنے آگئی ہے، جس میں بتایا گیا ہے کہ ان میں زیتون کا تیل اور شہد تھا۔ادھر مقامی عدالت نے اس معاملے میں گرفتار تین ملازمین کی درخواست ضمانت بھی منظور کرلی ہے۔ شرجیل انعام میمن کے خون کا تجزیہ ضیاالدین ہسپتال میں ان کے کمرے سے شراب کی بوتلوں کی برآمدگی کے بعد کروایا گیا تھا۔


ای پیپر